ایم کیوایم پر ملک دشمنی کا الزام مسترد کرتے ہیں، حیدرعباس رضوی -
The news is by your side.

Advertisement

ایم کیوایم پر ملک دشمنی کا الزام مسترد کرتے ہیں، حیدرعباس رضوی

کراچی: متحدہ قومی مومنٹ کی رابطہ کمیٹی نے کہا ہے کہ ایم کیوایم پر ملک دشمنی کا الزام مسترد کرتے ہیں، راؤانوارکی پریس کانفرنس میں سوائےجھوٹ کےاورکچھ نہیں تھا۔

متحدہ قومی مومنٹ کے رہنما حیدرعباس رضوی کا پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ آج پھر ایم کیوایم پر ایک ایس پی لیول سے الزام لگایا گیا، راؤانوارکی پریس کانفرنس میں سوائےجھوٹ کےاورکچھ نہیں تھا، ماضی میں لگائے جانے والے الزامات پر مافی مانگی گئیں ہیں ۔

انہوں نے کہا کہ ایک بارپھر 90 کی دہائی والی صورتحال نظرآرہی ہے، ماضی میں لگائےگئےالزامات دہرائےجارہےہیں، ایم کیوایم پر ماضی میں بھی الزامات لگتے رہے ہیں، کونسا ایسا الزام ہے جو ایم کیوایم پر نہیں لگا۔

ان کا کہنا تھا کہ جس شخص نے الزام لگایا اس کے کردارسے سب واقف ہیں،آج ہم پرملک دشمنی کا الزام عائد کیا گیا، حکیم سعید کیس میں ہمارے کئی کارکن ماورائے عدالت مارے گئے، راؤ انوار نوئے کی دہائی میں ایم کیوایم کے ہزاروں کارکنان کے ماروائے عدالت قتل کے ذمہ دار ہیں۔

حیدرعباس رضوی نے کہا کہ این اے 246 کو پاکستان کاسب سے بڑا ضمنی انتخاب بناکر پیش کیاگیا،لیکن تیئس اپریل کو ضمنی انتخاب میں ایم کیوایم کو بھاری مینڈیٹ ملا اور کراچی کے شہریوں نے ایم کیوایم پر لگائے گئے الزامات کومسترد کردیا۔

رابطہ کمیٹی کا میڈیا سے کہنا تھا کہ گزشتہ رات وزیراعلیٰ ہاؤس میں بھی ایک اہم ملاقات ہوئی،وزیراعلیٰ ہاؤس میں ملاقات میں زرداری صاحب بھی موجود تھے، وزیراعلیٰ ہاؤس ملاقات میں ایک اہم شخصیت بھی موجود تھی،میڈیا تیسری شخصیت کا پتا لگالیں،آج کی پریس کانفرنس سمجھ میں آجائیگی۔

انہوں نے کہا کہ ملک کی تیسری بڑی جماعت پر الزامات لگائے جا رہے ہیں،ہمارا اپوزیشن بنچوں پربیٹھنا کس کو برا لگ رہا ہے؟کس کی ایما پریہ جھوٹی پریس کانفرنس کی گئی؟پرانی کہانی اورپرانا کردار ہے،پولیس افسرکی پریس کانفرنس سیاسی ڈراما لگ رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ راؤ انوار کے مطابق جنید کو گزشتہ رات گرفتار کیا گیا جبکہ جنید کو 24 مارچ 2015 کو گرفتار کیا گیا،جنید کے اہلخانہ کی جانب سے  28 مارچ کو ہائیکورٹ میں پٹیشن داخل کی گئی تھی۔

حیدر عباس رضوی کا کہنا تھا کہ کب تک سرکاری افسرایم کیوایم پرالزامات لگاتےرہیں گے؟ سارا معاملہ سیاسی ڈرامہ لگتا ہے، ہم ہرقسم کی قانونی چارہ جوئی کریں گے، کل بھی پاکستانی ہونےپرفخرتھااورآج بھی ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں