The news is by your side.

Advertisement

تحریک انصاف کی اسمبلیوں میں واپسی، سپریم کورٹ میں درخواست

اسلام آباد : سابق چیف جسٹس افتخار محمد چودھری کے بیٹے ارسلان افتخار کی سپریم کورٹ میں تحریک انصاف کیخلاف درخواست، تفصیلات کے مطابق قومی اور صوبائی اسمبلیوں میں تحریک انصاف کی واپسی کا معاملہ عدالتوں میں چلا گیا۔ اسلام آباد اور لاہور ہائیکورٹ کے بعد سپریم کورٹ میں بھی درخواست دائر کر دی گئی۔

لاہورہائیکورٹ میں انتخابی دھاندلی کی تحقیقات کیلئےقائم جوڈیشل کمیشن کےخلاف درخواست کی سماعت ہوئی۔درخواست گزارنے موقف اختیارکیاکہ انتخابات کی تحقیقات کیلئے جوڈیشل  کمیشن کاقیام غیر قانونی ہے۔

دھاندلی کیسزکی سماعت صرف الیکشن ٹربیونل میں کی جاسکتی ہے۔سپریم کورٹ ن لیگ اور پی ٹی آئی کےدرمیان معاہدے کی پابند نہیں۔

عدالت جوڈیشل کمیشن کےقیام سےمتعلق صدارتی آرڈینس کو غیرآئینی قرار دے۔عدالت نے وفاقی حکومت اور وزرات داخلہ سے سات مئی تک جواب طلب کرلیا۔

تحریک انصاف کےاراکین اسمبلی کےاستعفوں کی منظوری کیلئےدرخواست کی لاہورہائیکورٹ میں سماعت ہوئی،درخواست سابق چیف جسٹس افتخار محمد چودھری کے بیٹے ارسلان افتخار کی جانب سے دائر کی گئی تھی۔درخواست گزار کے مطابق استعفےکے بعداراکین پارلیمنٹ دوبارہ اسمبلیوں میں نہیں بیٹھ سکتے۔

عدالت استعفی منظور کرتے ہوئے نشستیں خالی قراردینے کا حکم دے۔ سپریم کورٹ رجسٹری لاہور میں تحریک انصاف کےاراکین پارلیمنٹ کو نااہل قرار دینےکی درخواست کی سماعت ہوئی ۔

درخواست میں موقف اختیارکیاگیاہے کہ دستورکے مطابق چالیس روزتک غیرحاضررہنےوالا رکن پارلیمنٹ نااہل ہوجاتا ہے،پی ٹی آئی اراکین ساڑھے سات ماہ سے اسمبلی نہیں لائے۔بیرسٹر ظفراللہ کاکہناتھاعدالت پی ٹی آئی کےتمام اراکین کونااہل قراردے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں