site
stats
تھر میں قحط

تھرمیں مزید تین بچے چل بسے، حکومت کی بے حسی برقرار

مٹھی : تھر میں قحط نےآج مزید تین معصوم بچوں کی جان لے لی ۔ مرنے والے بچوں کی تعداد ایک سوچودہ ہوگئی، تھر کے واسیوں کے لئے اعلانات ہوں یا بڑے بڑے اجلاس ، بلند و بانگ دعوؤں کے باوجود تھری باشندوں کی حالت بہتر بنانے کے تمام دعوے صرف دعوے ہی رہ گئے۔

  قحط قہر بن کر ٹوٹ پڑا، تھر واسیوں کو نہ خوراک میسر ہے اور نہ اسپتالوں میں سہولتیں موجود ہیں، ہر طرف فقدان ہی فقدان نظر آتا ہے،اسپتالوں میں ایمرجنسی کے باوجود نہ عملے کو ہوش آیا نہ ہی ڈاکٹر سنجیدہ ہوئے۔

یہی وجہ ہے کہ تھر میں معصوم بچوں کی اموات کا سلسلہ تاحال نہ رک سکا۔آج بھی مٹھی کے سول اسپتال میں چار روز کی بچی بروقت طبی امداد نہ ملنے کے باعث دم توڑ گئی۔

چھاچھرو کے گاؤں ارنرو میں بھوک نے ایک اور ماں کی گود سُونی کردی ۔ سول اسپتال مٹھی میں سینتالیس سے زائد بچے اب بھی زیرعلاج ہیں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top