The news is by your side.

Advertisement

سانحہ ماڈل ٹاؤن کی ایف آئی آر،اے آر وائی نیوزکوموصول

لاہور: سانحہ ماڈل ٹاؤن میں شہیدچودہ افراداورنوےکےقریب زخمیوں کامقدمہ تھانہ فیصل ٹاؤن میں درج کرلیاگیا، مقدمہ لاہور ہائیکورٹ کے حکم پرمنہاج القرآن سیکریٹریٹ کےڈائریکٹرڈاکٹرجوادحامدکی مدعیت درج کیاگیا۔

 سانحہِ ماڈل ٹاؤن کےچودہ شہدا کی ایف آئی آر وفاقی حکومت کے احکامات کی روشنی میں تھانہ فیصل ٹاؤن میں درج کر لی گئی،رپورٹ کے مطابق ایڈیشنل سیشن جج نے وزیراعظم ،وزیر اعلی پنجاب، وفاقی وزرا اوردیگر پولیس حکام سمیت اکیس افراد کےخلاف مقدمہ درج کرنے کا حکم دیا،جسے چار وزراء نے لاہور ہائیکورٹ میں چیلنج کیا،لاہور ہائیکورٹ نے اپنے فیصلے میں ایڈشنل سیشن جج کےحکم کوبرقرار رکھا۔

وزیرِاعظم کی زیرصدارت اجلاس کے بعد فیصلہ ہوا کہ متاثرہ فریق کی شکایات کے مطابق مقدمہ درج کیاجائے،جس پر حکومت پنجاب نے پولیس کو ہدایت جاری کیں اور پولیس نے تھانہ فیصل ٹاؤن میں مقدمہ ایف آئی آر نمبر 696/14 درج کرلیا۔ مقدمہ میں شامل دفعات دفعہ 302قتل، 324اقدام قتل، 337زخمی کرنا، انسداد دہشتگردی ایکٹ7ATA،148اور149 پانچ سے زیادہ افرادکا حملے میں ملوث ہونا، 427توڑپھوڑکرنا، جبکہ اعانت کی دفعہ 109وزیراعلی شہبازشریف اور دیگر اہم شخصیات پر لگائی گئی۔ عدالتی حکم کے تحت گرفتاری جرم ثابت ہونے کےبعد کی جائےگی۔

ایف آئی آر میں نامزد ملزمان میں وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف، حمزہ شہباز ، عابد شیر علی، خواجہ آصف، پرویز رشید، چوہدری نثار ، رانا ثنا اللہ ، ایس پی سیکیورٹی سلمان اور دیگر شامل ہیں

FIR

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں