لفظ مہاجر کوگالی دینے پرعلماءکو جلوس نکالناچاہئے تھا،الطاف حسین -
The news is by your side.

Advertisement

لفظ مہاجر کوگالی دینے پرعلماءکو جلوس نکالناچاہئے تھا،الطاف حسین

کراچی: ایم کیو ایم کے قائد الطاف حسین نے کہا ہے کہ خورشید شاہ کے لفظ مہاجر کو گالی قرار دینے پر علمائے کرام کوسڑکوں پر جلوس نکالنا چاہیے تھا۔۔

محرم الحرام میں مذہبی راواداری اور فرقہ وارانہ ہم آہنگی برقرار رکھنے کے لیے علمائے کرام اور مذہبی اسکالرز سے خطاب میں الطاف حسین کا کہنا تھا کہ علمائے کرام گھروں میں آرام کرتے رہے اور کسی نے خورشید شاہ کیخلاف دو لفظ مذمت کے نہیں کہے۔

انکا کہنا تھا کہ مہاجر لفظ کو گالی قرار دینے والے کے خلاف علمائے کرام کو سڑکوں پر نکلنا چاہیے تھا۔ متحدہ سربراہ کا کہنا تھا کہ ملکی سلامتی اور اسے امن کا گہواراہ بنانے کے لیے مل کر کام کرنا ہوگا۔

انھوں نے کہا کہ نظام کی درستگی اور انقلاب کی بات اگر وہ کریں اور نواز شریف اور آصف زرداری کو دایاں اور بایاں بازو بنائیں تو پاکستان کی تعمیر نہیں ہوسکتی۔

الطاف حسین نے اپنے خطاب میں ایک بار پھر پاکستان بچاؤ ، نئے صوبے بناؤ کا نعرہ لگا دیا، جس کا تمام مکاتب فکر کے علمائے کرام نے بھی بھرپور جواب دیا۔

اپنےخطاب میں الطاف حسین نے متحدہ بین المسلمین فورم کو معطل کرکے میرٹ پر دوبارہ الیکشن کرانے کی ہدایت بھی کی ۔انکا کہنا تھا کہ فرقہ واریت کو پھیلانے کیلئے بعض علماء اور ادارے بھی ملوث ہیں۔

مذہبی رواداری اور اتحاد بین المسلمین کے ذریعے ہی قتل و غارت گری اور فرقہ واریت پر قابو پاسکتے ہیں ۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں