The news is by your side.

Advertisement

پارلیمنٹ کےمشترکہ اجلاس سےکروڑوں بھوکےعوام کوکیاملاہے، طاہرالقادری

اسلام آباد: ڈاکٹر طاہرالقادری نے حکومت کو دعوت دی ہے کہ دو چیزوں پر سزائے موت کا قانون بنایا جائے کہ کسی پارٹی نے غیرملکی ایجنسی یا ملکی ایجنسی سے پیسہ لیا ہوتواس کو سزائے موت دی جائے ۔

اسلام آباد میں جاری انقلابی دھرنے سے خطاب میں پاکستان عوامی تحریک کے سربراہ ڈاکٹرطاہرالقادری کا کہنا تھا کہ پارلیمنٹ کے جاری مشترکہ اجلاس پر 62لاکھ روپے روزانہ کا خرچہ ہو رہا ہے مگر اس مشترکہ اجلاس میں عوام کی بہتری اورآئین پرعمل درآمد کے سلسلے میں کوئی اقدامات نہیں کئے جا رہے، آئین کا آرٹیکل 38لوگوں کا معیار زندگی بلند کرنے کی گارنٹی دیتا ہے لیکن اس پارلیمنٹ نے اس پرعمل درآمد میں کوئی کردار ادا نہیں کیا، موجودہ اجلاس میں بھی جاری احتجاج کے باوجود اس ضمن میں کوئی اقدامات سامنے نہیں آئے۔

طاہرالقادری نے کہا کہ بیرون ملک سے فنڈنگ لینے اور کرپشن کرنیوالوں کیلئے سزائے موت کا قانون بنایا جائے، احتساب کیلئے سب سے پہلے خود کو پیش کرتا ہوں، کبھی شریعت کے نام پر مشرق یا مغرب سے پیسہ نہیں لیا، حکمرانوں میں جراٴت ہے تو فنڈنگ اور کرپشن پر قانون بنائیں۔34 سال میں میری جماعت نے ایک پیسہ بھی لیا ہو تو سزائے موت کیلئے تیار ہوں، کبھی شریعت یا سیاست کے نام پر پیسہ لیا ہو تو بھی پھانسی کیلئے تیار ہوں، ہمارے دھرنے سے قوم کو شعور ملا، آج ن لیگ کے کنونشن میں بھی ‘‘گونوازگو’’ کے نعرے لگے۔
.

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں