پولیس اہلکاروں کی ٹارگٹ کلنگ کی ذمہ داری انصارالخلافہ والجہاد نے قبول کرلی -
The news is by your side.

Advertisement

پولیس اہلکاروں کی ٹارگٹ کلنگ کی ذمہ داری انصارالخلافہ والجہاد نے قبول کرلی

کراچی: شہر کے مختلف علاقوں میں پولیس اہلکاروں کی ٹارگٹ کلنگ کی ذمہ داری انصارالخلافہ والجہاد نے قبول کرلی ہے۔

 انصار الخلافہ والجہاد نے داعش کی بیعت کا بھی اعلان کررکھا ہے، گروپ نے گذشتہ عرصے کے دوران کراچی ، ملتان ، اور حیدرآباد میں اپنی کارروائیوں کی تفصیلات جاری کردی ،جس کے مطابق ناظم آبادپاور ہاؤس، ایم اے جناح روڈ ، اور نیپا چورنگی سمیت شہر کے مختلف علاقوں میں پولیس اہلکاروں کی ٹارگٹ کلنگ کی گئی۔

 گروپ کے مطابق گذشتہ برس ملتان بار کونسل سے وابستہ راشد رحمان ایڈوکیٹ کو بھی توہین رسالت کے مبینہ ملزم کی پیروی کرنے پر قتل کیا ۔

 واضح رہے کہ کراچی میں بعض پولیس اہلکاروں پر حملے کی ذمہ داری القاعدہ برصغیر نے بھی قبول کی ہے جو کہ ڈاکٹر ایمن الظواہری کے ماتحت ہے۔

کراچی میں سال 2015 کے آغاز کے ساتھ ہی پولیس اور رینجرز کی ٹارگٹ کلنگ میں تیزی ہوئی، اب تک 19 اہلکاروں کو شہید کیا جاچکا ہے ۔

 پولیس کے مطابق کراچی میں سب سے ذیادہ پولیس کی شہادتیں سینٹرل زون میں ہوئی، ناظم آباد میں اب تک چار پولیس اہلکاروں کو شہید کیا جاچکا ہے۔

 سمن آباد میں دو، لیاری میں دو، اورنگی ٹاؤن میں دو، ملیر ، بلدیہ ٹاؤن، شارع نورجہاں، بنارس ، سائٹ سمیت مختلف علاقوں میں پولیس اہلکاروں کو نشانہ بنایا گیا، جبکہ رینجرز کے اہلکاروں کو لانڈھی کے علاقے میں فائرنگ کرکے شہید کیا گیا ۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں