The news is by your side.

Advertisement

خواتین نے جیل چھوڑکرگھرجانے سے انکارکیوں کیا

دبئی: اماراتی ریاست دبئی کی خواتین جیل میں قید متعدد خواتین نے سزائیں مکمل ہونے کے باوجود جیل کو ہی اپنا مسکن سمجھ کر باہر جانے سے انکار کردیا۔

تفصیلات کے مطابق متحدہ عرب امارات کی ریاست دبئی کی قید خانوں میں قید کچھ خواتین اپنی سزائیں مکمل ہونے کے باوجود جیل سے باہر نکلنے سے منع کردیا۔

اماراتی خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ سلاخوں کے پیچھے گزرنے والا اچھا وقت ان 11 خواتین کو اس قدر پسند آیا کہ اب وہ اپنے گھر جانے کے لیے راضی نہیں ہیں۔

خواتین جیل کی ڈائریکٹر کرنل جمیلہ کا کہنا ہے کہ ان گیارہ خواتین کا تعلق مختلف ممالک سے ہے جنہیں جیل عملے کا برتاؤ، اخلاق اور جیل میں مسیر سہولیات اس پسند آئیں وہ جیل میں رہنا چاہتی ہیں۔

کرنل جمیلہ کا کہنا تھا کہ دبئی کی جیل میں قید خواتین کو بہترین غذا اور طبی سہولیات فراہم کی جاتی ہیں اور قیدیوں کی صحت کا بھرپور خیال رکھا جاتا ہے ساتھ ہی ساتھ قیدیوں کے اہل خانہ سے رابطے کی سہولت بھی جیل میں موجود ہے۔

اماراتی میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہ جیل میں قید ایک عرب خاتون نے بتایا کہ اسے جیل میں پر امن ماحول ملا اور قید کی زندگی اس قدر خوش گواراوراچھی گزری جو مجھے میرے آبائی وطن میں بھی میسر نہیں آئی۔

مزید پڑھیں : نابینا ہونے کے باوجود ورلڈ ریکارڈ‌ بنانے کے لیے پرعزم ہسپانوی لڑکی

ایک اورغیرملکی خاتون کا کہنا تھا کہ قید کے دوران نہ صرف جیل عملے نے قیدیوں کے ساتھ اچھا برتاؤ رکھا بلکہ نئے ہنر بھی سیکھائے اور دیگر ضروریات بھی پوری کی۔

مزید پڑھیں : ’بھوت‘ سے شادی کرنے والی خاتون نے علیحدگی کا اعلان کردیا

خاتون قیدی کا کہنا تھا کہ دبئی کی خواتین جیل دیگر ممالک کے عقوبت خانوں سے جیسے نہیں ہیں بلکہ یہاں بہت بڑی لائبریری، کھیلوں کا میدان، ڈرائنگ روم سمیت کئی سہولیات موجود ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں