site
stats
دہشت گردی

کابل، انسداد دہشت گردی آپریشن میں دو اہم کمانڈرز سمیت 14 طالبان ہلاک

Kabul mosque attack

کابل : افغانستان میں انسداد دہشت گردی کے تحت کیئے جانے والے آپریشنز میں 14 طالبان ہلاک اور 25 زخمی ہوگئے ہیں ہلاک ہونے والوں میں 2 خطرناک کمانڈرز شامل ہیں.

تفصیلات کے مطابق دہشت گردوں کی سرکوبی کے لیے یہ آپریشن افغانستان کے صوبے قندوز اور فاریاب میں کیے گئے جہاں سیکیورٹی اداروں کو دہشت گردوں کے ایک طاقت ور گروہ کی موجودگی کی اطلاع مل تھی.

غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کا کہنا ہے کہ افغانستان کے دو صوبوں میں انٹیلی جنسڈ بنیادوں پر کیئے گئے آپریشن میں افغان فوج نے کو خاطر خواہ کامیابی حاصل ہوئی ہے جس کے دوران طالبان کمانڈر ملا طوفان اور قاری ظہیر سمیت 14 ہلاکتوں کی اطلاع ہیں.

ذرائع کا کہنا ہے کہ یہ کارروائی گزشتہ چند ماہ میں افغانستان کے مختلف علاقوں میں سیکیورٹی دفاتر، پارلیمنٹ اور عبادت گاہوں پر ہونے والے درجنوں خود کش دھماکوں میں سینکڑوں افراد لقمہ اجل بن گئے تھے، ان دھماکوں کی تحقیقات کے دوران اہم معلومات حاصل ہونے پر افغان صوبے قندوز اور فاریاب میں آپریشنز کیئے گئے.

افغان سیکیورٹی ایجنسی نے دونوں کمانڈرز کی ہلاکت کو افغان فوج کی اہم کامیابی قرار دیتے ہوئے کہنا تھا کہ مذکورہ کارروائی سے بلند حوصلہ افغان افواج کے عزائم مزید پختہ اور اعتماد میں اضافہ ہوا ہے جب کہ دہشت گرد خوف کے عالم میں پناہ ڈھونڈتے پھر رہے ہیں پر ان کا ٹھکانہ جہنم کے سوا اور کہیں نہیں.


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top