The news is by your side.

Advertisement

پانچ سو روپے کے عوض فروخت بچہ چند گھنٹوں میں بازیاب

قصور پولیس نے پانچ سو روپے کے عوض فروخت کیے گئے دو سال کے بچے کو چند گھنٹوں میں بازیاب کروالیا۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق قصور میں دو سال کے بچے ذبیح اللہ کو پانچ سو روپے کے عوض فروخت کردیا گیا تھا، پولیس نے کمسن بچے کو 9 گھنٹے بعد لاہور سے بازیاب کرواکر خاتون کو گرفتار کرلیا۔

ذرائع کا بتانا ہے کہ بچہ گھر کے دروازے پر کھڑا تھا خاتون نے اغوا کرکے اسے فروخت کیا، پولیس نے سی سی ٹی وی فوٹیج کی مدد سے ملزمہ کو گرفتار کیا۔

پولیس کے مطابق ملزمہ نے بچے کو 500 روپے کے عوض ایک گھرانے کو دے دیا تھا۔

ڈی پی او قصور صہیب اشرف کا کہنا ہے کہ خاتون بچے کو قصور سے اغوا کرکے لاہور لائی تھی، ایس پی انویسٹی گیشن کی قیادت میں پولیس ٹیم نے کیس کو حل کیا۔

ڈی پی او کے مطابق خاتون نے بچے کو ایک فیملی کے ہاں چھوڑا اور کہا کہ اس کے 11 بچے ہیں، سی سی ٹی وی فوٹیج کی مدد سے صرف 9 گھنٹے میں بچے کا سراغ لگایا گیا۔

ملزمہ نے پولیس کو دیے گئے بیان میں کہا کہ اس نے 500 روپے کے عوض بچے کو فروخت کیا ہے، بچے کو قصور سے لاہور لے کر آئی تھی۔

پولیس کا کہنا ہے کہ بچے کو والدین کے سپرد کردیا گیا ہے جبکہ گرفتار خاتون سے مزید تفتیش جاری ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں