The news is by your side.

Advertisement

ہیلتھ ورکر نے سعودی شہری کو کرونا ویکسین کے نام پر خالی انجیکشن لگا دیا

ریاض: سعودی عرب میں ایک ہیلتھ پریکٹشنر نے سعودی شہری کو کرونا وائرس ویکسین کے نام پر دوا سے خالی سرنج سے انجیکشن لگا دیا۔

تفصیلات کے مطابق ریاض میں ایک ایشیائی پریکٹشنر کو گرفتار کیا گیا ہے، جس نے ایک سعودی شہری کو کرونا وائرس کی ویکسین کے نام پر خالی انجیکشن لگا دیا تھا، اور اس واقعے کی ویڈیو بھی سامنے آئی۔

اتوار کو جاری ایک بیان میں ریاض میں محکمہ صحت کے جنرل ڈائریکٹوریٹ نے وضاحت کی کہ سوشل میڈیا پر گردش کرنے والی ویڈیو کا تعلق اسی واقعے سے ہے، جس میں ایک ایشیائی کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔

ڈائریکٹوریٹ نے کہا کہ یہ واقعہ ایک ماہ قبل کا ہے، ویڈیو میں ایک سعودی شہری کو ایک ایسا انجیکشن لگاتے دیکھا گیا جس میں کرونا سے بچاؤ کی ویکسین موجود نہیں تھی۔

بیان کے مطابق جب واقعے کی تحقیقات کی گئیں تو مذکورہ ہیلتھ پریکٹشنر کا تعلق ریاض کے ایک نجی میڈیکل کالج سے نکلا، جسے گرفتار کر لیا گیا، جب کہ مذکورہ شہری سے بھی رابطہ کر کے انھیں ضروری ہیلتھ سروسز فراہم کی گئیں۔

ڈائریکٹوریٹ نے اس بات پر زور دیا کہ اس طرح کا رویہ ہر صورت میں ناقابل قبول ہے، نہ ہی وزارت صحت کے منظور شدہ طبی اصولوں کے مطابق ہے۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ واقعے کے سلسلے میں متعلقہ حکام مزید تحقیقات کر رہے ہیں، ضوابط کے مطابق جو بھی ضروری اقدام اٹھانا پڑا، اٹھایا جائے گا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں