The news is by your side.

Advertisement

القاعدہ کے سربراہ ڈاکٹر ایمن الظواہری اخوان المسلمون کے حق میں سامنے آگئے

کابل: عالمی دہشت گرد تنظیم القاعدہ کے سربراہ ایمن الظواہری کا مصر کی کالعدم دینی وسیاسی تنظیم اخوان المسلون کے حق میں بیان سامنے آگیا۔

تفصیلات کے مطابق القاعدہ کے سربراہ ڈاکٹر ایمن الظواہری کا سوشل میڈیا کے ذریعے ایک نیا ویڈیو پیغام سامنے آیا ہے جس میں وہ مصر کی کالعدم جماعت اخوان المسلمون کا دفاع کرتے نظر آئے۔

ایمن الظواہری کی جانب سے یہ بیان اس وقت سامنے آٰیا کہ جب سعودی شہزادہ محمد بن سلمان نے گذشتہ دنوں مقامی میڈیا کو انٹرویو دیتے ہوئے اخوان المسلمون کے نظریے کی بیخ کنی کے عزم کا اعادہ کیا تھا۔

انٹرویو کے ردعمل میں القاعدہ کے سربراہ ڈاکٹر ایمن الظواہری نے اپنا ایک ویڈیو بیان جاری کیا جس میں انہوں نے اخوان المسلمون کی حمایت کرتے ہوئے ان کے نظریے کا مکمل دفاع کیا اور محمد بن سلمان کے تبصروں کو رد کر دیا۔

اخوان المسلمون دہشت گرد تنظیم ہے، مصری حکومت

خیال رہے کہ القاعدہ کے سربراہ کی جانب سے اخوان المسلمون کے دفاع کا کوئی اچنبھے کی بات نہیں کیوں کہ  وہ  ایک عرصے سے خود کو الاخوان کے فکری اور روحانی مرشد سید قطب کا شاگرد قرار دیتے چلے آرہے ہیں۔

واضح رہے کہ پاکستان کے شہر ایبٹ آبادمیں ماضی میں ہونے والے آپریشن کے بعد اسامہ بن لادن کے کمپاؤنڈ سے پکڑی گئی دستاویزات سے بھی القاعدہ اور مصر کی اخوان المسلمون کے درمیان مضبوط روابط کا پتا چلا ہے۔

عدالتی فیصلے کیخلاف اخوان المسلمون کے حامی سڑکوں پر نکل آئے

یاد رہے کہ اس سے قبل بھی ایمن الظواہری کی جانب سے متعدد بیانات سامنے آچکے جس میں وہ کئی مرتبہ مصر کی کالعدم تنظیم کی حمایت کر چکے ہیں۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں