The news is by your side.

Advertisement

اسکاٹ لینڈ: 16 سالہ نوجوان پر 6 سالہ بچی کو جنسی زیادتی کے بعد قتل کرنے کا جرم ثابت

ایڈن برگ: اسکاٹ لینڈ میں 16 سالہ نوجوان پر 6 سالہ بچی کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنانے کے بعد قتل کرنے کا جرم ثابت ہوگیا۔

ڈیلی میل کی رپورٹ کے مطابق مقامی عدالت کے جج میتھیو نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ 16 سالہ لڑکے نے 6 سالہ بچی کے ساتھ سفاکیت کی انتہا کردی جس کی مثال عدالتی تاریخ میں نہیں ملتی ہے۔

رپورٹ کے مطابق 6 سالہ بچی اپنے والد رابرٹ میک فیل اور والدہ جارجینا کے ہمراہ دادا دادی کے گھر گرمیوں کی چھٹیاں منانے پہنچی تھی وہ رات کو سو رہی تھی کہ 16 سالہ لڑکے نے اسے اغوا کیا۔

الیشا کی کی لاش اغوا ہونے کے چند گھنٹے بعد ہی قریبی جنگل سے ملی، جسم پر متعدد زخم کے نشانات موجود تھے۔

الیشا کے والد روبرٹ میک فیل اور والدہ جارجینا

پولیس کے مطابق الیشا کی موت چہرے اور گردن پر گہرے زخم آنے کے سبب ہوئی ہے، جج نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ میں نہیں جانتا کہ تم نے ایسا کیوں کیا لیکن تمہارے خلاف ٹھوس شواہد موجود ہیں۔

قانون کے تحت مجرم 16 سالہ لڑکے کا نام میڈیا پر ظاہر نہیں کیا گیا ہے تاہم عدالت نے 21 مارچ تک فیصلہ محفوظ کرلیا ہے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ ملزم لڑکے کا ڈی این اے الیشا کے کپڑوں اور جسم سے حاصل کیے جانے والے نمونوں سے ملتا ہے اور لڑکے نے الیشا کے والد روبرٹ میک فیل کو 2 جولائی کی رات کال کی تھی۔

الیشا کے دادا اور دادی

گرفتاری کے ڈر سے خوف زدہ لڑکے نے گوگل پر پولیس کس طرح ڈی این اے تلاش کرتی ہے لکھ کر سرچ بھی کیا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں