The news is by your side.

’افسوس امریکا تیسری دنیا کے ممالک جیسا بن گیا ہے‘

نیویارک: سابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے فلوریڈا میں اپنی رہائش گاہ پر ایف بی آئی کے چھاپے پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ امریکا آج تیسری دنیا کے ممالک جیسا بن چکا ہے۔

تفصیلات کے مطابق پیر کی شام کو فیڈرل بیورو آف انویسٹگیشن نے فلوریڈا میں سابق امریکی صدر کی رہائش گاہ مار اے لاگو پر چھاپا مارا، اور اہم دستاویزات قبضے میں لیں، چھاپے کی اطلاع ملتے ہی ٹرمپ کے درجنوں حامی رہائش گاہ کے باہر پہنچ کر احتجاج کرنے لگے ہیں۔

ڈونلڈ ٹرمپ نے ایف بی آئی کے چھاپے کو ‘غیر اعلانیہ چھاپا‘ قرار دیا، اور ایک طویل بیان میں ایف بی آئی کے چھاپے کا واٹر گیٹ اسکینڈل سے موازنہ کیا، اور چھاپے کے لیے بائیں بازو کے بنیاد پرست ڈیموکریٹس کو ذمہ دار قرار دیا۔

نشریات کی بندش: اے آر وائی کی لائیو ٹرانسمیشن یہاں دیکھیں

ٹرمپ نے کہا: "متعلقہ حکومتی اداروں کے ساتھ کام کرنے اور تعاون کرنے کے بعد، میرے گھر پر یہ غیر اعلانیہ چھاپا نہ ضروری تھا نہ ہی مناسب، انھوں نے میری تجوری بھی توڑ ڈالی۔”

امریکی میڈیا کا کہنا ہے کہ ٹرمپ چھاپے کے وقت فلوریڈا والے گھر پر نہیں تھے، وہ نیویارک کے علاقے میں ٹرمپ ٹاور میں موجود تھے۔

سابق صدر ٹرمپ نے اپنے بیان میں کہا: "یہ ہماری قوم کے لیے تاریک وقت ہے، یہ استغاثہ کی بدانتظامی اور انصاف کے نظام کو ہتھیار بنانے کے مترادف ہے، تاکہ مجھے دوبارہ وائٹ ہاؤس کے لیے انتخاب لڑنے سے روکا جا سکے۔”

ٹرمپ نے کہا: "اس طرح کا حملہ صرف ٹوٹے ہوئے، تیسری دنیا کے ممالک میں ہو سکتا ہے، افسوس کی بات ہے کہ امریکا اب ان ممالک میں سے ایک بن گیا ہے، اس سطح پر بدعنوانی پہلے کبھی دیکھنے میں نہیں آئی تھی۔”

Comments

یہ بھی پڑھیں