The news is by your side.

Advertisement

والدین کی بلااجازت طالبعلم کو کورونا ویکسین لگانے پر خاتون ٹیچر گرفتار

امریکا میں مبینہ طور پر سترہ سالہ طالبعلم کو کورونا ویکسین لگانے کے الزام میں گرفتار  ٹیچر کو جرم ثابت ہونے پر چار سال قید کی سزا ہوسکتی ہے۔

نیویارک کی نساوٗ کاوٗنٹی پولیس حکام کے مطابق بیرک ہائی اسکول کی سائنس ٹیچر لورا روسو نے اپنے طور پر کورونا ویکسین کا انتظام کیا اور بغیر کسی تربیت اور والدین کی اجازت کے بغیر طالبعلم کو لگا ڈالی جو ویکسین لگوانا چاہتا تھا۔

چون سالہ خاتون ٹیچر لورا روسو  کو سال نو کے پہلے روز حراست میں لیا گیا۔

ویکسین لگانے کی ویڈیو میں خاتون ٹیچر کو طالبعلم سے یہ کہتے دیکھا جاسکتا ہے کہ ‘‘ مجھے امید ہے، تم خیریت سے ہوگے’’۔

طالبعلم نے اسکول سے گھر جانے کے بعد اپنے والدین کو ویکسین کے بارے میں بتایا تو انہوں کی اس کی شکایت پولیس کو کی جس پر  ٹیچر کو گرفتار کرلیا گیا۔

اس حوالے سے ہیرک ہائی اسکول کے سپرنٹنڈنٹ کا کہنا ہے کہ مذکورہ ٹیچر لورا روسو کو معطل کردیا گیا ہے۔

نیویارک پولیس کے مطابق اب تک یہ پتہ نہیں چل سکا کہ مذکورہ خاتون ٹیچر نے ویکسین کہاں سے حاصل کی اور وہ کون سی ویکسین تھی۔

واضح رہے کہ اٹھارہ سال سے کم عمر امریکیوں کے لیے صرف فائزر کی بائیو این ٹیک ویکسین کی ہی اجازت دی گئی ہے۔

ملزمہ ٹیچر کے خلاف مقدمے کی عدالتی سماعت اکیس جنوری کو ہوگی، جرم ثابت ہونے پر چار سال قید کی سزا ہوسکتی ہے۔

یاد رہے کہ کورونا ویکسین کا انجکشن درست نہ لگانے وہ خطرناک ثابت ہوسکتا ہے اس لیے صرف ڈاکٹر یا تربیت اور لائسنس یافتہ عملہ ہی ویکسین کے بارے میں پوری طرح اطمینان کرنے کے بعد اسے لگا سکتے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں