The news is by your side.

Advertisement

امریکی کانگریس میں پاکستانی امداد کم کرنے کی سفارشات مسترد

واشنگٹن:امریکی کانگریس میں پاکستان کولیشن سپورٹ فنڈ میں کمی کی ترامیم مسترد کردی گئیں، ایک ممبر نے 20 ملین اور ایک ممبر نے پورا فنڈ ختم کرنے کی سفارشات پیش کی تھیں۔

اطلاعات کے مطابق کانگریس کے رکن ٹیڈ پو نے امریکا کی جانب سے پاکستان کے لیے مختص امدادی فنڈ میں سے دوسو ملین ڈالر کا فنڈ کم کرنے کی ترامیم پیش کیں جبکہ کانگریس کے ایک اور رکن ڈانا روہر باشر نے تمام امدادی فنڈ ختم کرنے کی سفارش کی اور مطالبہ کیا کہ پاکستان کو دی جانے والی تمام امداد روک لی جائے۔ پاکستان مخالف ارکان کا موقف تھا کہ یہ رقم منہا کرنا ضروری ہے کیوں کہ پاکستان دہشت گردی کے خلاف کارروائی نہیں کررہا۔

ووٹنگ کے دوران ارکان کی جانب سے ان دونوں سفارشات کی مخالفت میں کثرت سے ووٹ آئے، ڈانا روہر باشر کی حمایت میں 84 اور مخالفت میں 336 ووٹ کاسٹ ہوئےجس کے بعد یہ سفارشات مسترد کردی گئیں۔

واضح رہے کانگریس میں موجود پاکستان مخالف اور بھارت نواز امریکی ارکان کی جانب سے وقتا فوقتاً پاکستان پر پابندیاں عائد کرنے ،امداد میں کمی اور پاکستان کو نقصان پہنچانے کے لیے طرح طرح کی قرار دادیں اور سفارشات پیش کی جاتی ہیں تاہم کثر ت رائے نہ ملنے پر انہیں مسترد کردیا جاتا ہے۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ امریکی کانگریس میں پاکستانی امداد ختم کرنے کی سفارشات مسترد ہونا پاکستان کے لیے بہت بڑی کامیابی ہے، ووٹنگ سے ثابت ہوتا ہے کہ امریکی کانگریس کی اکثریت اب بھی پاکستان پر پابندیاں عائد کرنے اور دہشت گردی کے خلاف جنگ میں دی جانے والی سہولتیں یا امداد کم کرنے کے حق میں نہیں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں