The news is by your side.

سعودی عرب کو ڈیجیٹل گیمز اور اسپورٹس کا عالمی مرکز بنانے کی حکمت عملی کا اعلان

سعودی ولی عہد اور پہلے وزیراعظم شہزادہ محمد بن سلمان نے مملکت کو 2030 تک الیکٹرانک گیمز اور اسپورٹس کے بین الاقوامی سینٹر میں تبدیل کرنے کی حکمت عملی کا اعلان کردیا ہے۔

سعودی گزٹ رپورٹ کے مطابق سعودی عرب کے پہلے وزیراعظم اور ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے ’سافی گروپ فار الیکٹرانک گیمز‘ کی حکمت عملی کا اعلان کردیا ہے اور کہا ہے کہ سافی گروپ سعودی عرب کو 2030 تک الیکٹرانک گیمز اور اسپورٹس کے بین الاقوامی سینٹر میں تبدیل کرنے والی حکمت عملی کا کلیدی عنصر ہے۔ سافی گروپ فار الیکٹرانک گیمز پبلک انویسٹمنٹ فنڈ کے ماتحت ہے اور اس کی حکمت عملی کے متعدد اہم اہداف ہیں۔ ان میں سب سے بڑا ہدف یہ ہے کہ الیکٹرانک اسپورٹس اور گیمز سیکٹر میں سرمایہ کاری میں اضافہ کیا جائے۔

سعودی ولی عہد نے بتایا کہ سافی گروپ کی حکمت عملی کے تحت مملکت میں الیکٹرانک گیمز کی 250 کمپنیوں کے قیام پر کام ہوگا جس سے 39 ہزار افراد کو روزگار ملے گا۔ مجموعی قومی پیداوار میں اس سیکٹر کا حصہ سال 2030 تک بڑھ کر 50 ارب کے لگ بھگ ہوجائے گا۔

سافی گروپ کی حکمت عملی اس کی ماتحت 5 کمپنیاں نافذ کریں گی، ہر ایک اپنی خاص حکمت عملی کے ساتھ آزادانہ طریقے سے کام کرے گی۔

اس حکمت عملی کے تحت 4 پروگراموں میں 142 ارب ریال تک کا سرمایہ لگایا جائے گا۔ ان میں سے 50 ارب ریال ایک ایسی کمپنی میں لگائے جائیں گے جو اسپورٹس گیمز کے پرچار اور اسے نئی شکل دینے کے حوالے سے دنیا کی بہترین کمپنی ہوگی، 70 ارب ریال الیکٹرانک اسپورٹس سیکٹر اور گیمز کو نیا انداز دینے کے لیے ایک ایسے گروپ کے حصص خریدنے پر لگائے جائیں گے جو سافی گروپ کی سکیموں میں معاون بنے گا۔

اس کے علاوہ 2 ارب ریال الیکٹرانک اسپورٹس اور گیمز کی تجدید کی غرض سے نئی کمپنیوں میں لگائے جائیں گے، 20 ارب ریال گروپ کی حکمت عملی سے مطابقت رکھنے والی نامور کمپنیوں میں لگائے جائیں گے۔

شہزادہ محمد بن سلمان کا یہ بھی کہنا تھا کہ ہم الیکٹرانک اسپورٹس کے حوالے سے تفریحی سرگرمیوں اور مقابلہ جاتی پروگراموں کا معیار بلند کرنے کے خواہاں ہیں، ہم اسپورٹس اور الیکٹرانک گیمز کے حوالے سے موجود امکانات سے فائدہ اٹھا کر اپنی معیشت میں تنوع پیدا کرتے ہوئے جدت کے عمل کو آگے بڑھانے کے لیے کام کر رہے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں