The news is by your side.

Advertisement

حماس کے راکٹ حملے جائز ہیں، صدر عارف علوی

اسلام آباد: صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے کہا ہے کہ مسلم امّہ اسرائیل کے خلاف سخت قدم اٹھانے کی صلاحیت نہیں رکھتی، قابض کے خلاف حماس کے راکٹ حملے جائز ہیں۔

برطانوی خبررساں ادارے کو خصوصی انٹرویو دیتے ہوئے صدرِ مملکت نے اعتراف کیا کہ ’مسلم امّہ میں اسرائیل کے خلاف خود قدم اٹھانےکی صلاحیت نہیں کیونکہ ہم کمزور ہیں‘۔

ڈاکٹر عارف علوی نے کہا کہ ہم نے بھی تمام ممالک نے اسرائیلی جارحیت کی بس مذمت کی، عالمی سطح پر مسلمان خود کمزور ہیں، اسی لیے ہمیں طاقت ور کی آواز سننا پڑے گی۔

صدر مملکت کا کہنا تھا کہ کسی قابض کے خلاف مزاحمت عالمی قوانین کے تحت جائز ہے، حماس کی جانب سے اسرائیل پر کیے جانے والے راکٹ حملوں کو جائز سمجھتا ہوں۔

اُن کا مزید کہنا تھا کہ مسلم امہ بس رائے استوار کرنےکی کوشش کر رہی ہے کیونکہ  اسلامی ممالک کمزور ہیں۔

واضح رہے کہ اسرائیلی فورسز کی جانب سے گزشتہ دس روز سے فلسطین کے مختلف رہائشی علاقوں پر  فضائی بمباری کی جارہی ہے، جس کے نتیجے میں بچوں سمیت 200 سے زائد فلسطینی شہید ہوچکے ہیں۔

اسرائیلی فضائی حملوں کے نتیجے میں کئی رہائشی عمارتیں زمیں بوس ہوئیں جبکہ طیاروں نے میڈیا دفاتر کو بھی نشانہ بنایا ہے۔

اسرائیلی درندگی کےخلاف دنیا بھرمیں عوام کا احتجاج جاری ہے، امریکا کی مختلف ریاستوں میں اسرائیل مخالف ریلیاں نکالی گئیں۔مظاہرین نے اسرائیلی جارحیت کے خلاف سخت اقدامات کا مطالبہ کیا اور فلسطینیوں کے ساتھ یکجہتی کا اظہار کیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں