The news is by your side.

Advertisement

کاغذات چرانے والے نیب سے فارغ افسر کو صدر مملکت سے اپیل مہنگی پڑ گئی

اسلام آباد: صدر مملکت عارف علوی نے سابق اسسٹنٹ ڈائریکٹر نیب محمد عمیر کی اپیل مسترد کر دی۔

تفصیلات کے مطابق اہم کاغذات چرانے والے نیب سے فارغ افسر کو صدر مملکت سے اپیل مہنگی پڑ گئی، صدر مملکت نے اپیل مسترد کرتے ہوئے ان کے خلاف مزید کارروائی کا حکم جاری کیا۔

سابق اسسٹنٹ ڈائریکٹر نیب نے سروس سے نکالے جانے کے حکم پر صدر پاکستان سے اپیل کی تھی، محمد عمیر نے شرجیل میمن ریفرنس میں 15 اصل پراپرٹی ڈیڈ چرائے تھے، انکوائری کے بعد نیب نے محمد عمیر کو نوکری سے نکالنے کا حکم جاری کیا تھا۔

صدر مملکت نے نیب کی جانب سے محمد عمیر کو سروس سے فارغ کرنے کا حکم برقرار رکھا، اور کہا نیب محمد عمیر کے خلاف قانونی کارروائی کرے، جرم کی نوعیت پر نوکری سے برخاست کرنے کی سزا کافی نہیں، نیب محمد عمیر کے خلاف قانون کی آخری حد تک کارروائی کرے۔

صدر عارف علوی نے کہا نیب کی تحویل سے اصل کاغذات کی چوری ایک گھناؤنا جرم ہے، عوام کی آنکھوں میں دھول جھونکی گئی، دھوکا دیا گیا، پاکستان کو کرپٹ لٹیروں کی وجہ سے شدید نقصان اٹھانا پڑا ہے، آتش زدگی کی وجہ سے ثبوتوں پر مشتمل عمارتیں تک جل جاتی ہیں۔

انھوں نے کہا بیرون ملک موجود سیاست دانوں کے کرپشن کیسز میں بھی کاغذات چوری ہوتے ہیں، اس کیس میں کاغذات حادثاتی طور پر نہیں بلکہ ایک کرپٹ افسر نے جان بوجھ کر چرائے، صرف ضروری کاغذات چوری ہوئے جب کہ باقی سب کاغذ موجود رہے۔

صدر مملکت کا کہنا تھا کہ چوری باہر کا شخص نہیں بلکہ تفصیلات جاننے والا ملازم ہی کر سکتا ہے، میرے لیے اس کیس میں فیصلہ دینا نہایت باعث تکلیف ہے، مجرمانہ فعل کی وجہ سے قوم کو اربوں روپے کا نقصان ہوا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں