site
stats
اہم ترین

فیض آباد دھرنا صورتحال پرمذاکرات کیلئے سول و عسکری قیادت متفق

اسلام آباد: آرمی چیف آف اسٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا ہے کہ عوام کی محبت پاک فوج کا اثاثہ ہے اور اس محبت کو معمولی فوائد کے لیے دبایا نہیں جاسکتا، دھرنے کے معاملات مذاکرات کے ذریعے پرامن طریقے کے حل کرنے پر سول اور عسکری قیادت متفق ہوگئی۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے وزیراعظم شاہد خاقان عباسی سے ملاقات کے موقع پر کیا، ذرائع کے مطابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی سے آرمی چیف نے ملاقات کی، اس موقع پر وزیر اعلیٰ پنجاب میاں شہبازشریف بھی موجود تھے۔

ملاقات میں اسلام آباد دھرنے سے متعلق ملک میں پیدا ہونے والی ہنگامی صورت حال اور دھرنے کے معاملات مذاکرات کے ذریعے پرامن طریقے کے حل کرنے پر اتفاق کیا گیا، ذرائع کا مزید کہنا ہے کہ آرمی چیف نے دھرنے کیخلاف فوج تعیناتی کی تجویز نہیں دی۔

 امن بحال کرنے کے لیے فوج آئینی کردار مثبت طریقے سے ادا کرے گی تاہم آرٹیکل245کےتحت فوج سرکاری تنصیبات کی حفاظت کیلئے موجود رہے گی۔

ان کا کہنا تھا کہ عوام کی محبت پاک فوج کا اثاثہ ہے اس محبت کو معمولی فوائد کے لئے دبایا نہیں جاسکتا، بدامنی اورانتشارسے دنیا میں پاکستان کی ساکھ متاثر ہوگی۔

ذرائع کے مطابق ملاقات میں اتفاق کیا گیا کہ مظاہرین کو منتشر کرنے کی ذمہ داری پولیس اور سول سیکیورٹی اداروں کی ہے، غلطی کے مرتکب افراد کی نشاندہی اور اسے سزا دی جائے۔

ریاست کا حصہ ہوتے ہوئے فوج کااستعمال آخری آپشن ہوناچاہئے، پولیس اورانتظامیہ کی مدد کیلئے مزید فوجی دستے نہیں بھجوائےجارہے۔

اس کے علاوہ آرمی چیف نے ٹی وی چینلز کی نشریات بحال کرنے کی تجویز دی، وزیراعظم اور وزیراعلیٰ پنجاب نے آرمی چیف کی تجاویز سے اتفاق کیا، آرمی چیف کی تجویز کے بعد کیبل پر نیوزچینلز کی نشریات بحال ہونا شروع ہوگئیں۔

قبل ازیں آرمی چیف جنرل قمرجاوید باجوہ متحدہ عرب امارات کا دورہ مختصر کرکے وطن واپس پہنچے جس کے بعد انہوں نے وزیراعظم شاہد خاقان عباسی سے ملاقات کی۔

 

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top