The news is by your side.

Advertisement

صحافی ارشد شریف کو کیوں ہراساں کیا جا رہا ہے؟، ایف آئی اے سے جواب طلب

اسلام آباد: اے آر وائی نیوز کے سینیئر اینکر ارشدشریف کو ہراساں کئے جانے پر اسلام آباد ہائی کورٹ نے ڈی جی ایف آئی اے اور آئی جی اسلام آباد کو عدالت طلب کرلیا ہے۔

اے آر وائی نیوز کے اینکر صحافی ارشد شریف کو ہراساں کئےجانے کیخلاف اسلام آباد ہائیکورٹ میں دائر درخواست پر سماعت ہوئی، اسلام آباد ہائیکورٹ کے چیف جسٹس اطہر من اللہ نے سماعت کی۔

سماعت کے آغاز پر چیف جسٹس نے ارشد شریف کے وکیل سے استفسار کیا کہ کیا ایشو ہے؟ جس پر وکیل فیصل چوہدری نے عدالت کو بتایا کہ گزشتہ رات کچھ لوگ سادہ کپڑوں میں ارشد شریف کےگھر گئے، واقعے کے بعد ارشد شریف نے مجھے فون کیا اور پٹیشن فائل کرنےکا کہا، پٹیشنر کو شک ہے کہ ایف آئی اے انہیں غیر قانونی طور پر حراست میں لیناچاہتی ہے۔

فیصل چوہدری نے درخواست میں موقف اپنایا کہ ارشد شریف وزیراعظم شہباز شریف کیخلاف ٹی ٹی اسکینڈل پر کئی اسٹوریز سامنے لاچکے ہیں جس پر موجودہ حکومت کے وزرا اے آر وائی نیوز کیخلاف دھمکی آمیز ٹوئٹس بھی کرچکے۔

درخواست گزار کے وکیل کی جانب سے دئیے گئے دلائل کے بعد چیف جسٹس اسلام آباد اطہرمن اللہ نے ڈی جی ایف آئی اے ،آئی جی اسلام آباد کو نوٹس جاری کردیا ہے، تحریری حکم نامہ میں کہا گیا کہ وضاحت کریں کیوں صحافی ارشدشریف کو ہراساں کیا جا رہا ہے؟۔

چیف جسٹس اطہرمن اللہ کی جانب سے جاری تحریری حکم نامے میں کہا گیا کہ ایف آئی اے ارشد شریف یا کس بھی صحافی کو ہراساں نہ کرے، عدالت نے کیس کیمزید سماعت کل صبح ساڑھے دس بجے تک ملتوی کرتے ہوئے ایف آئی اے، آئی جی اسلام آباد کےمجازافسران کل عدالت میں پیش ہونے کا حکم دیا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں