کراچی: ایم کیو ایم کارکنان کا اے آر وائی نیوز کے دفتر پر حملہ -
The news is by your side.

Advertisement

کراچی: ایم کیو ایم کارکنان کا اے آر وائی نیوز کے دفتر پر حملہ

کراچی: اے آر وائی نیوز کے دفتر پر ایم کیو ایم کے مشتعل کارکنان نے حملہ کردیا، کارکنان نے دفتر میں توڑ پھوڑ کی  کارکنان نے مدینہ مال کے شیشے بھی توڑ دیئےاور ملازمین کو ہراساں کیا۔

ایم کیوایم کے مشتعل کارکنوں نے صدر کے مصروف ترین علاقے کو میدان جنگ بنادیا، اے آر وائی نیوز پر حملے کے بعد پریس کلب پر دھاوا بول دیا۔

اے آروائی نیوز کے دفترپرحملہ کرنے والوں نےکمپیوٹرتوڑڈالے، گارڈ سےاسلحہ بھی چھیننے کی کوشش کی۔

 تفصیلات کے مطابق  قائد ایم کیوایم کے خطاب کے بعد ایم کیوایم کے کارکنوں نے ٹی وی چینلز پر حملہ کردیا، کراچی کا مصروف ترین علاقہ صدر منٹوں میں میدان جنگ کا منظر پیش کرنے لگا۔

 کراچی مدینہ سٹی مال میں اے آروائی نیوز کے بیورو آفس پراپنا چہرہ ماسک میں چھپائے ایک شخص شیشے کا دروازہ توڑ کراندر داخل ہوا،  سی سی ٹی وی فوٹیج میں دیکھا جاسکتا ہے کہ اس شخص نے توڑ پھوڑ شروع کردی۔

اسے کے پیچھے پیچھے ڈنڈے اٹھائے کئی خواتین بھی دفترکے اندر گھس آئیں، انہوں نے ڈنڈے برسائے، کمپیوٹرپٹخے اور اے آروائی نیوز کے استقبالیہ دفترمیں تباہی مچادی، ایم کیو ایم کے کارکنوں نے اے آر وائی نیوز کے دفتر پر حملہ کرکے اس کو آگ لگانے کی کوشش کی۔

استقبالیہ پر تباہی مچانے کے بعد یہ لوگ دفتر کے دوسری حصوں میں بھی گھس گئے۔ عملے کو ہراساں کیا۔۔ اورمارپیٹ کی۔ سی سی ٹی وی فوٹیج میں ایک شخص گارڈ سے ہاتھا پائی کرتا نظرآرہا ہے۔ وہ گارڈ سے اس کا پستول چھیننے کی کوشش کررہا تھا لیکن اس میں کامیاب نہ ہوسکا۔

 ایم کیوایم کے مشتعل کارکنوں نے اے آر وائی کے دفتر پر حملے کے بعد پریس کلب کا رخ کیا۔ بے قابو افراد نے پریس کلب پر پتھراؤ کیا، اورپولیس پربھی حملے کیے گئے۔ پولیس کی شیلنگ کا جواب متحدہ کارکنوں نے پتھر مار کر دیا۔

ہنگامہ آرائی میں درجنوں افراد زخمی ہوئے جن میں سے ایک دم توڑ گیا۔ اے آروائی نیوز اور پریس کلب پر حملے کے بعد مشتعل افراد دوسرے ٹی وی چینلز کی جانب بھی بڑھ رہے تھے۔ پولیس نے متحدہ کے چھ کارکنوں کو گرفتار بھی کرلیا ہے۔

پریس کلب کے قریب پولیس اہلکاروں نے مشتعل مظاہرین کو منتشر کرنے کیلئے شیلنگ کی، جبکہ ایم کیوایم کے کارکنوں کی جانب سے بھی پولیس پر پتھراؤ کیا گیا، جس کے باعث کئی افراد کے زخمی ہونے کی بھی اطلاعات ہیں۔

p1

p2

اے آر وائی نیوز کا عملہ اللہ کے رحم و کرم پر تھا، مسلح افراد نے اے آر وائی نیوز کے رپورٹر کو دیکھ کر فائرنگ بھی کردی لاقانونیت اور توڑ پھوڑ کے دوران خواتین اسٹاف ڈری سہمی رہیں، ایم کیو ایم کے مسلح کارکنوں نے دفترمیں   توڑ پھوڑ اور ہنگامہ آرائی کے دوران قانون نافذ کرنے والے اداروں کے اہلکار کہیں نظر نہ آئے ۔ہرشے کو تو تہس نہس کرڈالا ۔

p3

p4

p5

p6

p7

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں