The news is by your side.

‘آج عمران خان کو عدالت میں بات کرنےکی اجازت دی گئی تو معافی مانگ سکتے ہیں’

اسلام آباد : تحریک انصاف کے رہنما اسد عمر کا کہنا ہے کہ آج عدالت میں عمران خان کو بات کرنے کی اجازت ملی تو ہوسکتا ہے وہ معافی مانگ لیں۔

تفصیلات کے مطابق تحریک انصاف کے رہنما اسد عمر نے اے ار وائی نیوز کے پروگرام آف دی ریکارڈ میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ موجودہ حکومت خوف میں وقت گزاررہی ہے، عمران خان کیخلاف ممکنہ فیصلہ کرنے کا ارادہ ہے ، اس لیے ریڈ زون سیل کردیا گیا ہے۔

اسد عمر کا کہنا تھا کہ کیاپورےپاکستان میں صرف ریڈزون ہےاورجگہوں پراحتجاج نہیں کیاجاسکتا، ہم دنیا سے ٹیکنالوجی عوام پر آنسوگیس چلانے کیلئے مانگتےہیں، اسلام آباد میں ریڈزون کو جس طرح بند کیا گیا ہے یہ غیر معمولی ہے۔

رہنما پی ٹی آئی نے کہا کہ عمران خان نےتوہین عدالت کیس میں واضح معذرت کی ہے، عمران خان نے بھی بتا دیا کہ قانونی کارروائی چاہتے تھے اور باقاعدہ پٹیشن بھی دی، عمران خان کے الفاظ کی بات ہے تو وہ وہی الفاظ ادا کر دیں گے جو چاہتے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ امید ہے کل عمران خان کوکل عدالت میں بات کرنےکی اجازت دی جائے، عمران خان کوبات کرنے کی اجازت دی گئی تومعافی بھی مانگ سکتے ہیں۔

اسد عمر نے مزید کہا کہ عمران خان کی جوپوزیشن ہےاس سےکبھی پیچھےنہیں ہٹے، انھوں نےکوئی نئی بات نہیں کی وہی باتیں کی ہیں جو کرتے رہتےہیں۔

تحریک انصاف کے رہنما کا کہنا تھا کہ ایک مفروضہ ہے کہ عمران خان کی ملاقات ہوئی میرےعلم میں نہیں ہے، ملاقات سے متعلق وقت فیصلہ کرے گا میں انکار بھی نہیں کروں گا، اسٹیبلشمنٹ سےبات کیلئے بائی پاس سے متعلق عمران خان کی بات نئی نہیں۔

انھوں نے بتایا کہ ہمارا ایک ہی مؤقف ہے کہ ملک میں فوری شفاف انتخابات کرادیں، تحریک عدم اعتماد سے پہلے بتا دیا تھا کہ حکومت گئی تومعیشت کونقصان ہوگا، وقت نےثابت کردیا کہ ہماری معیشت سےمتعلق بریفنگ بالکل درست تھی۔

شہباز شریف کی کابینہ کے حوالے سے اسد عمر کا کہنا تھا کہ موجودہ حکومت نےجتنی تباہی کی ہے72کابینہ کیا 7200 بھی کم ہوگی، پی ڈی ایم کی سیاست دفن ہوتی جارہی ہے اس لیے کابینہ بڑھتی جارہی ہے، آدھےارکان بیرون ملک گھوم رہےہوتےہیں اورآدھے لوگوں کوکابینہ میں شامل کرلیا۔

ملکی معاشی صورتحال سے متعلق رہنما پی ٹی آئی نے کہا کہ آئی ایم ایف کےاعلان کے بعد روپے کی قدر 26 روپے تک گرچکی ہے، عمران خان کابنیادی نقطہ یہ ہے کہ پاکستان کو نئے الیکشن کی طرف جانا چاہیے۔

موجودہ حکومت پر تنقید کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ اس وقت جوحکومت بیٹھی ہوئی ہےاس کااخلاق جوازعوام نہیں مانتی ، اخلاقی جوازنہ رکھنے والی حکومت بڑے فیصلےکرےگی تووہ متنازع بنیں گے۔

اسد عمر نے کہا کہ الیکشن کبھی بھی ہوں عمران خان نےوزیراعظم بن کرآناہے،جہاں حالات جارہےہیں ایسانہ ہو عمران خان کے بس سےبھی بات باہرہو۔

تحریک انصاف کے رہنما کا کہنا تھا کہ آرمی چیف کی تعیناتی کیلئےایک مجرم سے کس طرح مشاورت کی جا سکتی ہے، آفیشل سیکریٹ ایکٹ وزیراعظم سمیت تمام وزرا پر لاگو ہوتا ہے، وزیراعظم آفیشل سیکریٹ ایکٹ کی کس طرح خلاف ورزی کررہے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں