The news is by your side.

Advertisement

آصف زرداری کی تین بلٹ پروف گاڑیاں، ڈیوٹی اور ٹیکس کی جعلی اکاؤنٹس سے ادائیگی

کراچی : آصف زرداری کو تحفے میں ملنے والی تین بلٹ پروف گاڑیوں کا ٹیکس جعلی اکاؤنٹس سے ادا کیے جانے کا انکشاف ہوا ہے، ایف بی آر نے پی پی شریک چیئرمین کو طلب کرلیا۔

تفصیلات کے مطابق پیپلزپارٹی کے شریک چیئرمین آصف علی زرداری کی مشکلات میں مزید اضافہ ہوگیا ہے، فیڈرل بورڈ آف ریونیو نے آصف زرداری کو تحفے میں ملنے والی تین بلٹ پروف گاڑیوں کے معاملے نوٹس لے لیا ہے۔

اس حوالے سے ذرائع کا کہنا ہے کہ ایف بی آر نے جے آئی ٹی رپورٹ میں جعلی اکاؤنٹس کے انکشاف پر ایکشن کا فیصلہ کیا ہے، رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ آصف زرداری کو تحفے میں ملنے والی تین گاڑیاں2009میں دبئی سے پاکستان لائی گئیں۔

سال2014میں گاڑیوں کا ٹیکس اور ڈیوٹی جعلی اکاؤنٹس سے ادا کی گئی، مذکورہ گاڑیوں کے چالان بھی آصف زرداری کے نام سے جمع ہوئے، ان گاڑیوں پر3کروڑ71لاکھ روپے سے زائد کی رقم کسٹمز کو ادا کی گئی۔ ایف بی آر کا کہنا ہے کہ بےنامی اکاؤنٹس پر آصف زرداری کو25مارچ کو طلب کیا گیا ہے۔

اس حوالے سے ذرائع کا مزید کہنا ہے کہ آصف علی زرداری نے مبینہ طور پر  بحیثیت صدر مملکت پانچ بیش قیمت گاڑیوں کی درآمد کے ٹیکس اور ڈیوٹی کی ادائیگی جعلی اکاؤنٹس سے کی جبکہ دو بلٹ پروف گاڑیوں کو اپنی ویلتھ اسٹیٹمنٹ اور کاغذات نامزدگی میں پوشیدہ رکھا۔

مزید پڑھیں: نیب نے آصف زرداری اور بلاول بھٹو کو 20 مارچ کو طلب کرلیا

یہ تین گاڑیاں جن میں دو یو اے ای سفارت خانے اور ایک لیبیا کے سفارت خانے کی جانب سے سابق صدر کو بطور تحفہ دی گئی تھیں جو بعد ازاں ان ہی کے نام پر رجسٹرڈ ہوئیں جن کا تذکرہ انہوں نے اپنے ویلتھ اسٹیٹمنٹ اور قومی اسمبلی کے الیکشن کے لئے جمع کرائے گئے کاغذات نامزدگی میں بھی کیا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں