The news is by your side.

Advertisement

چاہے جتنا وقت لگے انتخابی اصلاحات کے بغیر الیکشن نہیں کرائیں گے، زرداری

سابق صدر آصف علی زرداری نے کہا ہے کہ ہمارا گیم پلان انتخابی اور نیب اصلاحات ہیں، چاہے جتنا وقت لگے انتخابی اصلاحات کے ﷽بغیر الیکشن نہیں کرائیں گے۔

سابق صدر اور پی پی پی کے شریک چیئرمین آصف علی زرداری نے کراچی میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ ہم نے سلیکٹڈ کو سیاسی طاقتوں کےذریعے ملکر ہٹایا، ہم نے کب کہا کہ ہم الیکشن سے ڈرتے ہیں لیکن ہمارا گیم پلان انتخابی اور نیب اصلاحات ہیں اور چاہے جتنا وقت لگے انتخابی اصلاحات کے بغیر الیکشن نہیں کرائیں گے۔

آصف زرداری نے کہا کہ رات میاں صاحب سے بات ہوئی ان کو سمجھا ان سے مشاورت کے بعد ہی بات کر رہا ہوں، عمران خان کا نعرہ ہے کہ الیکشن کرائیں تو جو حکومت میں ہوتے ہوئے 4 سال میں کچھ نہ کرسکے وہ نئے الیکشن میں کیا کرلیں گے۔

سابق صدر نے کہا کہ شہبازشریف کے سعودی عرب سے اچھے تعلقات ہیں، پیٹرول کی قیمتیں ہم نہیں بڑھانا چاہتے، پیٹرول مہنگا ہوتا ہے تو چکن، انڈے بھی مہنگے ہوجاتے ہیں، یہ کہتا ہے کہ میں آلو ٹماٹر کیلئے نہیں آیا مگر میں تو اسی کیلئے آیا ہوں، مجھے تو لوگوں کے بجھے ہوئے چولہے بھی چلانے ہیں۔

سابق صدر اور پی پی پی کے شریک چیئرمین آصف علی زرداری نے کراچی میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ ہم نے سلیکٹڈ کو سیاسی طاقتوں کےذریعے ملکر ہٹایا، ہم نے کب کہا کہ ہم الیکشن سے ڈرتے ہیں لیکن ہمارا گیم پلان انتخابی اور نیب اصلاحات ہیں اور ن لیگ نے میرے ساتھ طے کیا الیکشن ریفارمز کرنے ہیں، اس سے قبل الیکشن نہیں ہونگے، خواجہ آصف کی اپنی سوچ ہے، کوئی ان باتوں کو سنجیدہ لینا ہے تو کوئی نہیں لیتا لیکن ان پر لازم ہے کہ وہ اپنی قیادت کے پابند رہیں۔

آصف زرداری نے کہا کہ رات میاں صاحب سے بات ہوئی ان کو سمجھا ان سے مشاورت کے بعد ہی بات کر رہا ہوں، عمران خان کا نعرہ ہے کہ الیکشن کرائیں تو جو حکومت میں ہوتے ہوئے 4 سال میں کچھ نہ کرسکے وہ نئے الیکشن میں کیا کرلیں گے۔

سابق صدر نے کہا کہ شہبازشریف کے سعودی عرب سے اچھے تعلقات ہیں، پیٹرول کی قیمتیں ہم نہیں بڑھانا چاہتے، پیٹرول مہنگا ہوتا ہے تو چکن، انڈے بھی مہنگے ہوجاتے ہیں، یہ کہتا ہے کہ میں آلو ٹماٹر کیلئے نہیں آیا مگر میں تو اسی کیلئے آیا ہوں، مجھے تو لوگوں کے بجھے ہوئے چولہے بھی چلانے ہیں۔

آصف زرداری نے مزید کہا کہ پہلی بار فوج غیر سیاسی ہوئی ہے، اس پر مجھے جنرل باجوہ کو سلیوٹ کرنا چاہیے یا لڑنا چاہیے؟ شکر ہے کہ اس عمل میں معلوم ہوا کہ وہ نیوٹرل رہ سکتے ہیں، انہوں نے یہ نہیں کہا کہ زرداری یا شہباز شریف کو ووٹ دیں سویلینز کے جو بھی مسائل ہیں وہ ہم نے حل کرنے ہیں ہم کس بات کی تنخواہ لے رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ نئی حکومت آئی ہے، وزیراعظم شہباز شریف باہر گئے ہیں وہ آجائیں پھر مل کر بیٹھیں گے، ہم ہر اقدام سوچ سمجھ کر کریں گے، مسائل ہمیں ہی حل کرنے ہیں اور اس وقت آؤٹ آف باکس سلیوشن کی ضرورت ہے، آج 50 ہزار روپے تنخواہ والے کو بھی مسائل کا سامنا ہے، چاہتا ہوں تاجر برادری ساتھ بیٹھے ان سے مشاورت کرنا چاہتا ہوں۔

سابق صدر آصف علی زرداری نے کہا ہے کہ اوورسیز پاکستانی گمراہ ہیں ان کو ملک کے زمینی حقائق کا پتہ نہیں ہے، میری نظر میں کوئی پاکستان چلاسکتا ہے تو وہ ہم ہیں، یہ نہیں چلا سکتا، ہم اسمبلیوں میں اقلیتوں کی طرح اوورسیز کیلئے بھی سیٹیں رکھ لیں گے، یہ ہر چیز کو سیاسی بناتے ہیں جس کی وجہ سے عدم استحکام آتاہے، اگر ہم صحیح راستہ لیں گے تو صحیح منزل پر پہنچیں گے

انہوں نے عمران خان کا نام لیے بغیر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ یہ کون سا بنگال کا نواب ہے جس کےساتھ میر جعفر اور میر صادق ہوگیا، یہ کون ہوتا ہے جو لوگوں کو تمغے دے رہا ہے، سکندر مرزا کے بیٹے کی کتاب پڑھیں تو تصویر سامنے آجائیگی، میں نے کہا تھا کہ یہ اپنے وزن سے گریں گے، انکے دوستوں نے ان کو چھوڑا۔

آصف زرداری نے مزید کہا کہ میرا مشورہ ہے کہ بیوروکریسی کو نیب سے الگ کردیں، سیاستدانوں کو نیب جب بھی بلائے ہم جانے کو تیار ہیں مگر ریفارمز ہونے چاہئیں، پلی بارگین ہوتی ہے 20 فیصد ان کی جیب میں 30 فیصد کسی اور کی جیب میں چلا جاتا ہے،

انہوں نے کہا کہ میں نے پارلیمنٹ میں کھڑے ہوکر سلیکٹڈ کو کہا تھا میثاق معیشت بنالو لیکن سلیکٹڈ کو سمجھ نہیں آیا کہ میں ان سے کہہ کیا رہا ہوں روپے کو اتنا کمزور نہیں کرنا تھا کہ وہ 195 تک پہنچ جائے میرے زمانے میں بھی ڈالر سوئنگ کرتا تھا مگر60 سے اوپر نہیں جانے دیتے تھے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں