The news is by your side.

Advertisement

وادی ہنزہ کی خوبصورتی ، ثقافت اور اقدار خطرے میں

گلگت: قدرت کے حسین نظاروں سے سجی جنت نظیر وادی ہنزہ کی خوبصورتی ، ثقافت اور اقدار خطرے میں پڑ گیا ہے۔

کرونا کیسز میں کمی آنے کے بعد این سی او سی کی جانب سے شمالی علاقہ جات میں سیاحت کو ایس او پیز کے تحت کھولا جاچکا ہے، جس کے باعث ہزاروں کی تعداد میں سیاح پاکستان کی جنت نظیر وادیوں کا رخ کررہے ہیں۔

تاہم کچھ ناخوشگوار واقعات نے لوگوں کو افسردہ کردیا ہے جس پر لوگ سوشل میڈیا پلیٹ فارم کے زریعے اس پر ناگواری کا اظہار کررہے ہیں، اسی طرح کا ایک واقعہ ہنزہ میں پیش آیا ہے، جہاں میوزک فیسٹیول میں منشیات کا استعمال اور بے ہودگی پھیلانے کا انکشاف ہوا ہے۔

ہنزہ میں ہونے والے میوزک فیسٹیول پر مقامی لوگوں نے اظہار برہمی کیا اور اسے وادی ہنزہ کی ثقافت کی توہین قرار دیا۔مقامی افراد کہتے ہیں کہ مقامی سیاحوں کو ہنزہ کے لوگوں نے ہمیشہ خوش آمدید کہا ہے، ہمارا شکوہ یہ ہے کہ مقامی سیاح ہنزہ میں سیر و تفریح کے بعد علاقے کو آلودہ کرتے ہیں، جس کے باعث علاقے میں جگہ جگہ کچرے کے ڈھیر بننے لگے ہیں، یہی نہیں کچھ ایسی نامناسب سرگرمیوں بھی ہوئی، جس کے باعث مقامی لوگوں کے احساسات مجروح ہوئے۔

مقامی افراد کا شکوہ ہے کہ ایک جانب مقامی لوگ ہنزہ میں سیاحت کے فروغ کے لئے کوشاں ہیں، تو دوسری جانب ہمارے اپنے ملک کے لوگ اسے نقصان پہنچارہے ہیں۔

کنیڈین وی لاگر روزی گیبریل نے بھی اس مسئلہ کی نشاندہی سوشل میڈیا کے پلیٹ فارم پر کی، جس کے بعد سوشل میڈیا میں یہ مسئلہ زیر بحث ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں