The news is by your side.

Advertisement

فشارِ خون اور 1978 کے دو ڈاک ٹکٹ

1978 میں فشارِ خون سے متعلق لوگوں میں شعور اجاگر کرنے اور اس حوالے سے آگاہی دینے کے لیے حکومتِ پاکستان نے ڈاک ٹکٹ جاری کیے تھے۔

پاکستان میں خون کے دباؤ سے متعلق آگاہی دینے کے لیے اپریل کا مہینہ مخصوص کیا گیا تھا اور اس ماہ کی 20 تاریخ کو محکمہ ڈاک نے دو یادگاری ڈاک ٹکٹ جاری کیے تھے۔

پاکستان کے محکمہ ڈاک کے جاری کردہ ان ٹکٹوں کی مالیت 20 پیسے اور دو روپے تھی جن میں سے ایک ڈاک ٹکٹ پر اردو میں’’خون کے اضافی دباؤ میں کمی کیجیے‘‘ اور دوسرے پر انگریزی میں جملہ تحریر تھا۔

بلند فشارِ خون یا ہائی بلڈ پریشر ایسا مرض ہے جو جسم کے مختلف اعضا کی خرابی کا باعث بنتا ہے اور زندگی کو خطرے سے دوچار کر دیتا ہے۔

طبی ماہرین اسے خاموش قاتل بھی کہتے ہیں، کیوں کہ عام امراض کی طرح اس کی علامات ظاہر نہیں ہوتیں۔

ماہرین صحت کے مطابق بلڈ پریشر کو کنٹرول رکھنے کی کوششوں کے ساتھ باقاعدہ طبی معائنہ کروانا چاہیے اور اگر معالج اس حوالے سے کوئی دوا تجویز کرے تو اسے باقاعدگی سے استعمال کرنا چاہیے۔

طبی تحقیق کے مطابق مسلسل اور زیادہ کام، ذہنی دباؤ اور پریشانیاں بھی فشارِ خون کے مسائل پیدا کرتی ہیں جن میں ہائی بلڈ پریشر خطرناک مرض ہے۔

طبی ماہرین کا کہنا ہے کہ کھانوں‌ میں نمک کا زیادہ استعمال اور مرغن غذائوں کے علاوہ سگریٹ نوشی بھی اس کی وجہ بنتی ہے جسے ترک کرکے ایک بہتر اور صحت مند زندگی گزاری جاسکتی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں