The news is by your side.

Advertisement

تیمر کے جنگلات کی حفاظت کرنے والی باہمت معمر خاتون

کراچی: کراچی سے تعلق رکھنے والی بہتر سالہ خاتون نے سمندر میں تیمر کے جنگلات کو بچانے کا بیڑا اٹھالیا ہے۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق سینڈز پٹ اور ہاکس بے کی ساحلی پٹی پر واقع تیمرکے جنگلات جسے کراچی کے پھیپھڑے کہا جائے تو بے جا نہ ہوگا، ان کے تحفظ کے لئے صوبائی حکومت تو سرگرم نظر آتی ہے، مگر بہتر سالہ مقامی خاتون نے ان جنگلات کو بچانے کی ٹھان کر معاشرے کے لئے ایک مثبت پیغام دیا ہے۔

یہ معمر خاتون سگھرانہ حاجی صدیق ہیں، جو سینڈز پٹ کے علاقے کاکاپیر گاؤں سے تعلق رکھتی ہیں، ایک طویل عرصے سے اس علاقے میں مقیم ہے، اے آر وائی نیوز سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے سگھرانہ خاتون کا کہنا تھا کہ مینگروز ہماری زندگی کے ساتھ ساتھ ہے، یہ ہمارے گاؤں والوں کے لئے چار دیواری ہے، جس میں ہم محفوظ ہیں ۔

مذکورہ خاتون کا کہنا تھا کہ ہم مقامی افراد کو ان کی کٹائی سے بھی روکتے ہیں جبکہ ہماری خواتین مل کر تیمر کے پودوں کی نرسریاں لگاتی ہیں اور ان کی حفاظت کرتی ہیں، دوسری جانب ڈبلیو ڈبلیو ایف پاکستان اس علاقے کی خواتین کو بااختیار بنانے میں کوشاں ہے۔

واضح رہے کہ پاکستان میں صوبہ سندھ کے ساحلی شہر کراچی کے ساحل پر واقع مینگرووز کے جنگلات کا شمار دنیا کے بڑے جنگلات میں کیا جاتا ہے۔ یہ جنگلات کراچی میں سینڈز پٹ سے لے کر پورٹ قاسم تک پھیلے ہوئے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:  ساحلی علاقوں میں پاک بحریہ کی شجر کاری مہم کا آغاز

تیمر کا جنگل بیک وقت نمکین اور تازہ پانیوں میں نشونما پاتا ہے اور دریائے سندھ کا زرخیز ڈیلٹا ان ہرے بھرے مینگرووز کا گھر ہے۔

سنہ 2004 میں بحیرہ عرب میں آنے والے خطرناک سونامی نے بھارت سمیت کئی ممالک کو اپنا نشانہ بنایا تاہم پاکستان انہی تیمر کے جنگلات کی وجہ سے محفوظ رہا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں