The news is by your side.

Advertisement

تمام معمر برطانوی قرنطینہ میں رکھے جائیں گے

لندن: برطانیہ نے اپنے ضعیف شہریوں کو مہلک کرونا وائرس سے بچانے کے لیے بڑا فیصلہ کر لیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق برطانیہ میں 70 سال سے بڑی عمر کے افراد کو 4 ماہ قرنطینہ میں رکھنے کی تیاری ہونے لگی ہے، یہ فیصلہ معمر شہریوں کو کرونا وائرس کے وار سے بچانے کے لیے کیا گیا ہے۔

غیر ملکی میڈیا کا کہنا ہے کہ آیندہ چند دنوں میں تمام معمر افراد سے کہا جائے گا کہ وہ اپنے سماجی میل جول ختم کر کے گھروں تک محدود ہو جائیں، اگر کسی میں کرونا وائرس کی تشخیص ہوئی تو اسے فوری طور پر قرنطینہ میں رکھا جائے گا۔

برطانوی ہیلتھ سیکریٹری میٹ ہانوک نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ ستر سال سے زائد عمر کے لوگوں کو ‘سیلف آئسولیشن’ کے ذریعے وائرس سے بچایا جائے گا۔ انھوں نے یہ بھی کہا کہ برطانیہ کے اقدامات اب تک یورپ میں ہونے والے اقدامات کے مقابلے میں بہت کم سخت ہیں۔ خیال رہے کہ اٹلی، اسپین اور فرانس نے کرونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے سخت لاک ڈاؤن نافذ کر دیا ہے۔

دنیا سناٹے کی طرف بڑھنے لگی، کرونا وائرس سے 6521 افراد ہلاک

ادھر اپوزیشن کی لیبر پارٹی کی ممبر پارلیمنٹ کیٹ اوزبرن میں کرونا وائرس کی تشخیص ہو گئی ہے۔ کیٹ اوزبرن کا کہنا تھا کہ سیلف آئسولیشن کے بعد ٹیسٹ میں وائرس کا انکشاف ہوا۔ دوسری طرف اسکاٹ لینڈ کے کیئر ہوم میں رہایش پذیر 6 افراد میں بھی کرونا کی تصدیق ہو گئی ہے۔ برطانیہ میں کرونا وائرس سے اموات 35 ہو چکی ہیں جب کہ متاثرہ افراد کی تعداد 1391 تک پہنچ گئی ہے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں