The news is by your side.

Advertisement

پاکستا ن کو ریڈ لسٹ سے نکالنے سے متعلق فیصلہ ٹیکنیکل گراﺅنڈ پر کیا جائے گا، برطانوی وزیر خارجہ

اسلام آباد : برطانوی وزیر خارجہ ڈومینک راب کا کہنا ہے کہ پاکستا ن کو ریڈ لسٹ سے نکالنے سے متعلق فیصلہ ٹیکنیکل گراﺅنڈ پر کیا جائے گا اور امید کرتے ہیں طالبان افغانستان میں امن و استحکام لائیں گے۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان کے دورے پر آئے برطانوی وزیر خارجہ ڈومینک راب نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ شاہ محمود قریشی سے مثبت اور تعمیری بات چیت ہوئی ، پاکستان کیساتھ تعلقات کو مزید مستحکم کرناچاہتے ہیں اور افغانستان سے برطانوی باشندوں کےانخلا پر پاکستان کے شکر گزار ہیں۔

ڈومینک راب کا کہنا تھا کہ افغان پڑوسیوں کوانسانی زندگی کے بچاؤ کیلئے30ملین پاؤنڈ فراہم کررہے ہیں، خطے میں پاکستان کا کردار انتہائی اہمیت کا حامل رہاہے، افغان عوام کے مستقبل کےبارے میں مشترکہ خیالات رکھتےہیں،افغانستان کی انسانی ہمدردی کی بنیاد پر امداد جاری رکھیں گے۔

برطانوی وزیر خارجہ نے مزید کہا کہ افغانستان کے پڑوسی ممالک بشمول پاکستان کی مالی مدد کریں گے ، ہم افغانستان میں امن و استحکام کے خواہاں ہیں ، امید کرتے ہیں طالبان افغانستان میں امن و استحکام لائیں گے ۔

پاکستان کا نام ریڈ لسٹ میں برقرار رکھنے کے حوالے سے ان کا کہنا تھا کہ ریڈلسٹ معاملے پر ڈاکٹر فیصل جلد برطانیہ میں ہیلتھ حکام سے ملاقات کریں گے ، جس کے بعد پاکستا ن کو ریڈ لسٹ سے نکالنے سے متعلق فیصلہ ٹیکنیکل گراﺅنڈ پر کیا جائے گا۔

طالبان سے متعلق ڈومینک راب نے کہا کہ افغانستان میں نئے حقائق کاسامنا کرناپڑے گا اور طالبان سے بات چیت کا سلسلہ جاری رہےگا، افغانستان میں طالبان نے بعض مثبت اقدامات اٹھائے ہیں، ہم براہ راست طالبان کو فنڈنگ نہیں کریں گے۔

برطانوی وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ افغانستان کےعوام کیلئے انسانی ہمدردی کی تنظیموں کے ذریعے امداد کریں گے تاہم امدادی ایجنسیزکےذریعےافغان عوام کی امدادکیلئےسازگارماحول ضروری ہے۔

انھوں نے مزید کہا کہ افغانستان میں طالبان کی تیز پیش قدمی سب کیلئے حیران کن تھی ، دنیا میں کوئی تصور نہیں کررہا تھا کہ حالات اتنی تیزی سے بدلیں گے، آج ہم اضافی امداد کی پہلی قسط جاری کریں گے اور 30ملین پاؤنڈزجان بچانے والی ادویات پر خرچ ہوں گے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں