The news is by your side.

Advertisement

زمینی فضا میں زہریلی گیس، خطرہ بڑھ گیا

ہوائی: زمینی فضا میں زہریلی گیس کی مقدار خطرناک حد تک بڑھ گئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق امریکی ریاست ہوائی میں قائم ماؤنا لووا آبزرویٹری کا کہنا ہے کہ گزشتہ چند ماہ کے دوران کاربن ڈائی آکسائیڈ گیس کے ارتکاز کی اوسط شرح 419 پارٹیکلز فی ملین ہو گئی ہے۔

امریکی مشاہدہ گاہ کا کہنا ہے کہ کرونا وائرس کی وبا کے باوجود زمین کی فضا میں زہریلی کاربن ڈائی آکسائیڈ گیس کا ارتکاز تاریخی حد تک زیادہ ہو گیا ہے۔

سان ڈیاگو میں قائم اسکرپس اوشیانوگرافی ادارے کا کہنا ہے کہ مئی 2021 میں ماہانہ اوسط کے ساتھ ماؤنا لووا آبزرویٹری میں زمینی فضا میں کاربن ڈائی آکسائیڈ کی جو مقدار نوٹ کی گئی ہے وہ، 36 سال قبل جب سے یہ آبزرویٹری بالکل درست مقدار بتانے لگی ہے، تب سے اب تک کی بلند ترین شرح ہے۔

اس مشاہدہ گاہ نے زمین کی فضا میں اس گیس کے ارتکاز کی پیمائش کا سلسلہ 1958 میں شروع کیا تھا اور تب سے آج تک یہ شرح پہلے کبھی اتنی زیادہ نہیں رہی تھی، پچھلے برس مئی میں یہ اوسط شرح 417 پی پی ایم رہی تھی۔

اسکرپس ادارے کے جیو کیمسٹ رالف کیلنگ کا کہنا ہے کہ فضا میں سی او ٹو پر قابو پانے کا ذریعہ فوسل فیول کے بخارات پر قابو پانا ہے، تاہم ہمیں اب بھی اس اضافے کو روکنے کے لیے بہت وقت لگے گا، کیوں کہ ہر سال CO2 اوپر اٹھ کر فضا میں جمع ہوتی جا رہی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں