افطاری اور سحری میں احتیاط، ماہ صیام اچھا گزاریں -
The news is by your side.

Advertisement

افطاری اور سحری میں احتیاط، ماہ صیام اچھا گزاریں

اگر آپ رمضان المبارک میں صحت مند رہنا چاہتے ہیں تو تھوڑی سی احتیاط کر کے ماہ صیام کا مہینہ بہت اچھے طریقے سے گزار سکتے ہیں، طبی  ماہرین کے مطابق روزہ رکھنے سے جسم میں موجود فاضل مادہ ختم ہوتا ہے جب ہی شریعت نے روزے کو جسم کی زکوۃ کے نام سے منسوب کیا ہے۔

سحری میں موزوں خوراک کا استعمال:

شریعت میں سحری کو بہت اہمیت دی گئی ہے، طبی ماہرین کے مطابق سحری میں خوراک کا استعمال بہت ضروری ہے ، روزہ رکھنے کے لیے ایسی اشیاء استعمال کریں جس میں کاربوہائیڈریٹس زیادہ ہوں جیسے چکی کے آٹے کی روٹی، دلیہ، گوشت، مچھلی، مرغی، انڈے کے استعمال اور دودھ سے بنی ہوئی چیزوں کو سحری میں خوراک کے طور پر استعمال کر کے روزے کو اچھے طریقے سے گزارا جاسکتا ہے۔

1

حکمت سے تعلق رکھنے والے محقق کے مطابق سحری کے وقت اسپغول کی بھوسی کے استعمال سے نظام انہضام بہتر رہتا ہےاور اس سے پیٹ بھرنے کا احساس زیادہ دیر تک رہتا ہے اگر کوئی شخص سحری میں روٹی کھانے سے گریز کرتا ہے تو وہ کھجور کھا کر بھی اپنے روزے کو بہتر طریقے سے گزار سکتا ہے کیونکہ ایک کھجور میں روٹی کے برابر کی طاقت ہوتی ہے۔

افطار کے وقت احتیاط :

2

 روزے دار کو چاہیے کہ وہ افطار کے وقت چینی ، گھی ، تیل سے بنی ہوئی چیزوں کا استعمال کم سے کم رکھے، ایسی چیزوں کے زیادہ استعمال سے انسانی جسم میں موجود میٹا بولیزم پر منفی اثرات مرتب ہوتے ہیں، جس کی وجہ سے اکثر افطار کے بعد سر میں درد ، سستی اور تھکاوٹ محسوس ہوتی ہے، سارا دن معدہ خالی ہونے کی وجہ ایسی اشیاء کا فوری استعمال معدے پر سوجن بڑھا دیتا ہے  جس کی وجہ سے گیس ، قبض اور دیگر مسائل کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔

3

اس کے برعکس افطاری میں کھجور، دہی، پانی اور تازہ پھلوں کے استعمال سے انسانی جسم افطار کے بعد بھی کافی دیر تک ترو تازہ رہتا ہے، اگر آپ تلی ہوئی چیزیں افطار میں پسند کرتے ہیں تو تقریباً پھلوں کے استعمال سے دس منٹ  انتظار کے بعد یہ اشیاء استعمال کر سکتے ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں