نگراں وزیراعظم پر وزیراعظم اورخورشیدشاہ میں ڈیڈلاک ختم
The news is by your side.

Advertisement

نگراں وزیراعظم پر وزیراعظم اورخورشیدشاہ میں ڈیڈلاک ختم، کچھ دیربعد مشترکہ پریس کانفرنس کریں گے

اسلام آباد : نگراں وزیراعظم کی تقرری کے معاملے پر وزیراعظم شاہد خاقان عباسی اور اپوزیشن لیڈر خورشید شاہ میں ڈیڈلاک ختم ہوگیا ، دونوں ساڑھے 12 بجے مشترکہ پریس کانفرنس کریں گے، جس میں  متفقہ امیدوارکے اعلان کا امکان ہے۔

تفصیلات کے مطابق ن لیگ کی حکومت ختم ہونے میں 3 دن رہ گئے ، نگراں وزیراعظم کی تقرری پر وزیراعظم اور خورشیدشاہ کی وزیراعظم آفس میں ملاقات ہوئی ، دونوں کے درمیان ملاقات تقریباً35 منٹ جاری رہی۔

دوران ملاقات نگراں وزیراعظم کے حوالے سے ناموں پر غور کیا گیا اور  متفقہ امیدوار کے نام پر اتفاق کرلیا گیا ہے۔

نگراں وزیراعظم کی تقرری کے معاملے پر وزیراعظم شاہد خاقان عباسی اور اپوزیشن لیڈر خورشید شاہ میں ڈیڈ لاک ختم ہوگیا، دونوں رہنما ساڑھے 12 بجے مشترکہ پریس کانفرنس کریں گے، مشترکہ پریس کانفرنس وزیراعظم ہاؤس کے بجائے پارلیمنٹ ہاؤس میں ہوگی ، جس میں نگراں وزیراعظم کا اعلان متوقع ہے۔

اسپیکرقومی اسمبلی ایازصادق بھی پریس کانفرنس میں موجودہوں گے۔

ثابت کریں گےفیصلےپارلیمنٹ میں ہوتےہیں،کوئی اورنہیں کرتا،خورشید شاہ


خورشید شاہ کا کہنا ہے کہ وزیر اعظم اور میرے درمیان ففٹی ففٹی اتفاق ہوگیا ہے،  وزیر اعظم کے ساتھ ساڑھے بارہ بجے مشترکہ پریس کانفرنس کریں گے،  ساڑھے بارہ بجے سےپہلے وزیر اعظم سےایک اور ملاقات ہوگی،  ڈیڈ لاک ختم ہوگیا ہے۔

اپوزیشن لیڈر کا کہنا تھا کہ ثابت کریں گےفیصلےپارلیمنٹ میں ہوتےہیں،کوئی اورنہیں کرتا،  میری پوری کوشش ہےکہ یہ فیصلہ سیاستدان کریں، پہلےدن سےپارلیمنٹ کی بالادستی کی بات کرتاہوں۔

ذرائع کے مطابق گزشتہ روز  وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے اپوزیشن لیڈر خورشید شاہ سے رابطہ کرکے  خصوصی طور پر ملاقات کے لیے کراچی سے اسلام آباد بلایا تھا۔

وزیراعظم سے ملاقات سے قبل خورشید شاہ کا کہنا تھا کہ کوشش ہوگی کہ آج معاملہ حل ہوجائے اور اگر ایسا نہ ہوا تو پارلیمانی کمیٹی کے علاوہ کوئی راستہ نہیں۔

واضح رہے کہ اس سے قبل دونوں رہنماﺅں میں 5 ملاقاتیں ہو چکی ہیں جن میں نگران وزیراعظم کے نام پر اتفاق رائے نہیں ہو سکا تھا۔

خیال رہے کہ نگراں وزیراعظم کے انتخاب کیلئے مروجہ طریقہ کار کے مطابق وزیراعظم اور اپوزیشن لیڈر کی جانب سے نام سامنے آتے ہیں اور کسی ایک نام پر اتفاق ہونے پر اسے نگراں وزیراعظم نامزد کردیا جاتا ہے۔

طریقہ کار کے مطابق وزیراعظم اور قائد حزب اختلاف میں نگراں وزیر اعظم کے نام پر اتفاق نہ ہو ا تو معاملہ پارلیمانی کمیٹی میں چلا جائے گا، حکومت اور اپوزیشن ارکان پر مشتمل پارلیمانی کمیٹی اسپیکر کی جانب سے قائم کی جائے گی۔ کمیٹی کے پاس نگراں وزیر اعظم کا فیصلہ کرنے کے لئے تین روز ہوں گے ۔

پارلیمانی کمیٹی بھی نگراں وزیر اعظم کا نام دینے میں ناکام رہی تو معاملہ خود بخود الیکشن کمیشن کے پاس چلا جائے گا پھر الیکشن کمیشن کو اختیار ہوگا کہ حکومت اور اپوزیشن کی طرف سے نامزد دو دو ناموں میں سے کسی ایک کو نگراں وزیر اعظم منتخب کرے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں