The news is by your side.

Advertisement

راولپنڈی  میں ریلی ، کیپٹن(ر) صفدر سمیت ن لیگی رہنماؤں کے خلاف مقدمات درج

راولپنڈی : گزشتہ روز راولپنڈی  میں ریلی نکالنے پر نون لیگی رہنماؤں کیخلاف مقدمات درج کرلئے گئے، مقدمات میں کیپٹن(ر) صفدر، چوہدری تنویر، دانیال چوہدری سمیت 15 افراد کو نامزد کیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی پر مسلم لیگ ن رہنماؤں کیخلاف پرچہ کٹ گیا،تھانہ وارث خان، تھانہ سٹی اور تھانہ نیوٹاؤن میں ایس ایچ اوکی مدعیت ایف آئی آر درج کی گئیں۔

مقدمےمیں کیپٹن(ر) صفدر ،  چوہدری تنویر، دانیال چوہدری، راجہ حنیف ،شیخ ارسلان اورضیا اللہ شاہ سمیت پندرہ کو افراد نامزد کیا گیا ہے جبکہ مقدمہ میں سیکڑوں نامعلوم افراد کو بھی نامزد کیا گیا ہے ۔مقدمہ میں مسلم لیگ (ن)کے قومی اسمبلی کا ایک اور صوبائی اسمبلی کے دو امیدوار بھی نامزد ہیں۔

ایف آئی آر کے متن میں کہا گیا ہے سزا یافتہ مجرم کیپٹن(ر)صفدر نے ریلی کی قیادت کی اور روڈ بلاک کیا، ملزمان ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کے جرم کے مرتکب ہوئے۔

مقدمہ دفعہ 147، 149، 188اور341 کے تحت درج کیا گیا جبکہ اس میں ایمپلی فائرایکٹ کی دفعات بھی شامل ہیں۔

یاد رہے کہ گزشتہ روز لیگی رہنماؤں نے سزا یافتہ مجرم کیپٹن ریٹائرڈ محمد صفدر کی قیادت میں راولپنڈی کے راجا بازار سے ریلی نکالی اور سڑک بھی بند کردی تھی۔

خیال رہے کہ پنجاب کی جانب سے ریلی نکالنےپردفعہ ایک سوچوالیس کے تحت پابندی عائدہے

دوسری جانب کیپٹن(ر) صدر کے حق میں بلا اجازت ریلی نکالنے کے واقعہ پر ایک اور مقدمہ درج کرلیا گیا ہے، ریلی نکالنےوالوں کیخلاف تھانہ سٹی میں پولیس کی مدعیت میں مقدمہ درج کیا، جس میں شکیل اعوان سمیت 50 سے زائد لیگی رہنماؤں اور کارکنان کو نامزد کیا ہے۔


مزید پڑھیں :  نیب نے کیپٹن (ر) صفدر کو گرفتار کرلیا


واضح رہے کہ گزشتہ روز نیب کی ٹیم نے ریلی کے دوران گرفتار کیا تھا ، نیب نے ان کی گرفتاری کے لیے ایبٹ آباد میں واقع ان کے گھر پر چھاپہ مارا تاہم وہ نیب کی ٹیم کو چکمہ دے کر راولپنڈی پہنچے اور ن لیگ کی ریلی کی قیادت کرنے لگے۔

کیپٹن (ر) صفدر 3 گھنٹے تک راولپنڈی کی سڑٖکوں پر جلوس نکالتے رہے اور تقاریر کرتے رہے، اس دوران پولیس نے انہیں گرفتار کرنے کی کوشش کی لیکن ن لیگ کے کارکنوں نے مزاحمت کر کے پولیس کو گرفتار کرنے سے روک دیا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔ 

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں