The news is by your side.

Advertisement

چین کی کرونا وائرس کیخلاف کوشش رنگ لے آئیں

بیجنگ : چین میں کرونا وائرس دم توڑنے لگا، 80 ہزار متاثرین میں سے 67 ہزار افراد صحت یاب ہوگئے جبکہ متاثرین اورہلاکتوں کی تعداد میں نمایاں کمی آرہی ہے۔

تفصیلات کے مطابق چین میں کرونا وائرس کیخلاف کوشش رنگ لے آئیں اور ملک بھرمیں وائرس دم توڑنے لگا، 80 ہزار متاثرین میں سے 66 ہزار افراد صحت یاب ہوگئے جبکہ متاثرین اورہلاکتوں کی تعداد میں نمایاں کمی آرہی ہے۔

چوبیس گھنٹے کے دوران 18 کیسز رپورٹ ہوئے، جو اب تک کی سب سے کم تعداد ہے، تین ماہ بعد وائرس کے باعث بند شہروں میں نظام زندگی بحال ہونےلگی اور شہرمیں مختلف کمپنیوں کو آپریشن بحال کرنے کی اجازت دے دی گئی ہے۔

یاد رہے چین نے مریضوں کی تعداد میں کمی کے باعث وائرس کے لیے عارضی طور پر بنائے گئے اسپتال بند کردیے ہیں جبکہ شنگھائی میں کرونا وائرس کے مریضوں کی صحتیابی کی شرح 93 فیصد ہوگئی ہیں۔

کرونا وائرس کا آغاز چین کے وسطی صوبے ہوبی سے ہوا تھا اور اس کا شہر ووہان سب سے زیادہ متاثر ہوا ، چین نے کرونا وائرس سے نمٹنے کیلئے سخت اقدامات کئے تھے۔

مزید پڑھیں : کرونا وائرس بے قابو: دنیا بھر میں ساڑھے4 ہزار سے زائد افراد ہلاک

دوسری جانب دنیا بھر میں کرونا وائرس سے ہلاکتوں کا سلسلہ تاحال جاری ہے، اب تک چار ہزارچھ سو سے زیادہ افراد جان سے گئے جبکہ 119 ممالک میں ایک لاکھ 26 ہزار افراد اس وائرس کا شکار ہوچکے ہیں ، جس میں سے 67 ہزار افراد صحت یاب ہوگئے۔

چین کے بعد اٹلی اور ایران کرونا وائرس کے نشانے پر ہیں، اٹلی میں آٹھ سو سے زیادہ افراد جان سے گئےجبکہ  نو ہزار متاثر ہیں ، ملک بھر میں لاک ڈاون برقرار ہے، دواؤں اورکھانے پینے کی اشیا کی دکانیں کے علاوہ تمام دکانیں اوراسٹورزبند کردئیے گئے  ہیں۔

ایران میں ہلاکتوں کی تعداد تین سو پچاس سے تجاوز کرگئی ہے جبکہ  قطر میں ایک دن میں دو سو اڑتیس کیسز سامنے آگئے ہیں، اسی طرح برطانیہ میں آٹھ افراد ہلاک اور چار سو سے زیادہ متاثرہیں اور چھ برطانوی اراکین پارلیمنٹ خودسےقرنطینہ میں چلےگئے ہیں ۔

جنوبی کوریا میں وائرس سے 66 افراد ہلاک اور 7 ہزارسے زیادہ متاثر ہیں جبکہ فرانس،جرمنی اوراسپین میں متاثرین کی تعداد دو ہزار سے تجاوز کرگئی ہے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں