The news is by your side.

Advertisement

بھارت متنازع علاقے سے فوج واپس بلائے ورنہ شرمندگی اٹھائے گا، چین

بیجنگ: چین نے بھارت کو خبردار کیا ہے کہ اگر اُس نے متنازع سرحدی علاقے سے اپنی فوج واپس نہ بلائی تو اُسے ہزیمت کا سامنا کرنا پڑے گا۔

چینی میڈیا کے مطابق سکم کے سرحدی علاقے پر بھارت اور چین کے درمیان کشیدگی بڑھ گئی ہے جس کو دیکھتے ہوئے بیجنگ حکام نے مودی سرکار کو خبردار کیا ہے کہ اگر وہ ہمالیہ میں موجود متنازع سرحدی علاقے میں تعینات بھارتی فوج کو واپس نہیں بلائے گا تو شرمندگی کا سامنا کرنے کے لیے تیار ہوجائے۔

چین کے سرکاری خبر رساں ادارے نے بھارت کو خبردار کرتے ہوئے کہا ہے کہ اگر بھارت مذاکرات کا خواہش مند ہے تو وہ ڈوکلام سے اپنی فوجیں واپس بلائے، جب تک فوج واپس نہیں جائے گی مذاکرات کی کوئی گنجائش نہیں ہے۔

چینی حکام کا کہنا ہے کہ بھارت کو اس سے پہلے بھی ڈوکلام سے فوجیں ہٹانے کا مطالبہ کیا گیا ہے تاہم اُس نے نظر انداز کیا اور سرحدی علاقے میں کشیدگی کو ہوا دی، اگر بھارت نے اب بھی ہمارا مطالبہ تسلیم نہیں کیا تو اُسے ہزیمت کا سامنا کرنا پڑے گا۔

یاد رہے بھارت نے متنازع سرحدی علاقے ڈوکلام میں اپنی فوج اتار رکھی ہے، چینی فوج سرحد سے متصل جگہ پر سڑک تعمیر کر نا چاہتی ہے، بھارت کو خدشہ ہے کہ اگر سڑک کی تعمیر مکمل ہوگئی تو وہ خطے میں چین سے اسٹریٹیجک معاملات میں پیچے رہ جائے گا۔


اگرآپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اوراگرآپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پرشیئرکریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں