پختونخواہ میں چینی زبان سکھانے کے ادارے قائم کرنے کا فیصلہ -
The news is by your side.

Advertisement

پختونخواہ میں چینی زبان سکھانے کے ادارے قائم کرنے کا فیصلہ

پشاور: وزیر اعلیٰ خیبر پختونخواہ پرویز خٹک نے صوبے میں چینی زبان سکھانے کے ادارے قائم کرنے کی تجویز کی منظوری دے دی ہے۔

یہ ادارے پختونخواہ کے 4 ضلعوں پشاور، ایبٹ آباد، ہری پور اور مانسہرہ میں قائم کیے جائیں گے اور ان کا مقصد پاک چین اقتصادی راہداری کے تناظر میں یہاں آںے والے چینی شہریوں سے روابط قائم کرنا ہے۔

فرنٹیئر ایجوکیشن فاؤنڈیشن کے بورڈ آف ڈائریکٹرز کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے پرویز خٹک کا کہنا تھا کہ دوسرے مرحلے میں اس نوعیت کے ادارے صوبے کے جنوبی اضلاع اور مالاکنڈ ڈویژن میں بھی قائم کیے جائیں گے تاکہ صوبے کے نوجوان سی پیک سے فوائد حاصل کر سکیں اور اس کے تحت ہونے والی صوبے کی ترقی میں اپنا کردار ادا کرسکیں۔

اجلاس کو بتایا گیا کہ ان میں سے 3 پشاور، ایبٹ آباد اور ہری پور میں قائم کیے جانے والے ادارے 10 اگست تک فعال کردیے جائیں گے۔

مزید پڑھیں: پاکستان میں کتنی زبانیں بولی جاتی ہیں؟

اجلاس میں وزیر اعلیٰ نے مختلف تعلیمی فنڈز اور وظائف کے لیے 28.4 کروڑ روپے جاری کرنے کی منظوری بھی دی۔

دوران اجلاس وزیر اعلیٰ کو بتایا گیا کہ مختلف چینی یونیورسٹیوں کی جانب سے پاکستانی طلبا کو اسکالر شپ فراہم کرنے کے پروگرام کے تحت شنگ ڈونگ یونیورسٹی ایک سو طلبا کو تعلیمی وظائف دے رہی ہے جو ستمبر میں چین کے لیے روانہ ہوجائیں گے۔

ان طلبا کو فیسوں اور رہائش کے اخراجات میں 50 فیصد رعایت دی جارہی ہے۔

اسی طرز پر ہربیئن انجینئرنگ یونیورسٹی اور شنگھائی یونیورسٹی بھی 100، 100 طلبا کو وظائف دے رہی ہیں۔

دوسری جانب تیانجن ماڈرن ووکیشنل ٹیکنالوجی کالج میں 40 طلبا اپنی تربیت مکمل کر کے ڈپلومہ حاصل کرنے والے ہیں۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں