The news is by your side.

Advertisement

کروناوائرس: ’دنیا تیار ہوجائے‘ عالمی ادارہ صحت نے خطرے کی گھنٹی بجا دی

نیویارک: عالمی ادارہ صحت کے ڈاکٹر ہنس کلیگ نے عالمگیر وبا سے متعلق نئے خطرے کی طرف اشارہ کردیا۔

غیرملکی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق ڈبلیو ایچ او کے ماہر ہنس کلیگ نے دنیا کو کروناوائرس کی دوسری اور تیسری لہر کی پیش گوئی کرتے ہوئے تیار رہنے کا مشورہ دیا ہے۔

انہوں نے خبردار کیا کہ کرونا کی نئی لہروں سے یورپ سب سے زیادہ متاثر ہوگا، جبکہ دنیا بھر میں بڑے بڑے صحت کے شعبے بھی کسی کام کے نہیں رہیں گے، تمام ممالک کو ہرممکن اقدامات کے لیے تیار رہنا ہے۔

ڈاکٹر ہنس کلیگ کا کہنا تھا کہ کرونا کی موجودہ حالات سے یورپ ابھی سے ہی شدید متاثر ہے، سب سے زیادہ اموات یورپی ممالک میں ہوئیں، کوئی بھی تاحال ویکسین تیار کرنے میں کامیاب نہیں ہوا ہے۔

‘بدترین وقت ابھی آیا نہیں آنے والا ہے’عالمی ادارہ صحت نے دنیا کو بڑے خطرے سے خبردار کر دیا

انہوں نے کہا کہ کرونا ویکسین کی تیاری حال میں ہوتی نظر نہیں آرہی، اس کے لیے کافی وقت درکار ہے۔

خیال رہے کہ گزشتہ دنوں کرونا وائرس کے پیش نظرعالمی ادارہ صحت (ڈبلیو ایچ او) کے سربراہ ڈاکٹر ٹیڈرس نے ایک بار پھر دنیا کو خبردار کرتے ہوئے کہا کہ بدترین وقت ابھی آیا نہیں آنے والا ہے، کورونا ایک حقیقت ہے۔

عالمی ادارہ صحت کا کہنا تھا کہ ساری دنیا کو متحدہ ہو کر اس وائرس سے لڑنا ہوگا، کوروناوائرس 100سال کے دوران پہلی بار آیا ہے ، 1918 میں انفلوئنزہ سے 10کروڑ افراد ہلاک ہوئے تھے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں