The news is by your side.

Advertisement

حکومتی کارکردگی کے حوالے سے اقدامات بھر پور اجاگر کرنے کافیصلہ

لاہور : وزیراعلیٰ پنجاب سردارعثمان بزدار اور وفاقی وزیر اطلاعات شبلی فراز کی ملاقات میں حکومتی کارکردگی کے حوالے سے اقدامات بھر پور اجاگر کرنے کا فیصلہ کرلیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعلیٰ پنجاب سردارعثمان بزدار اوروفاقی وزیر اطلاعات شبلی فراز کی ملاقات ہوئی ، ملاقات میں باہمی دلچسپی کے امور، سیاسی صورتحال اورمیڈیا حکمت عملی پر تبادلہ خیال کیا گیا اور عوام کوریلیف دینے کےاقدامات اورفلاح عامہ کےمنصوبوں پر بات چیت کی گئی۔

ملاقات میں حکومتی کارکردگی کے حوالے سےاقدامات بھر پور اجاگر کرنے کافیصلہ کیا گیا ،وزیراعلیٰ پنجاب سردارعثمان بزدار نے کہا
حکومت کی 2 برس کی کارکردگی ماضی کے30سالہ دورسےبہت بہتر ہے، حکومتی اقدامات عوام کےسامنےلانےکیلئےمیڈیاکاکردار کلیدی ہے۔

عثمان بزدار کا کہنا تھا کہ کرپٹ عناصر کابلاامتیاز احتساب پاکستان کی ترقی و خوشحالی کاضامن ہے، قومی وسائل کے غلط استعمال کی سابق روایت کو ختم کردیا ہے، عوام کا پیسہ عوام کی امانت ہے اوراب عوام پر ہی صرف ہو رہا ہے۔

وزیراعلیٰ پنجاب نے کہا کہ اپوزیشن جماعتوں کاگٹھ جوڑ صرف ذاتی مفادات کے تحفظ کےلیےہے، اے پی سی کی آڑ میں غیر فطری اتحاد کی داغ بیل ڈالی جا رہی ہے، یہ عناصر اپنی کرپشن کےداغ چھپانے کی ناکام کوشش کر رہے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ اےپی سی کےغبارے سےجلدہوانکل جائے گی، 22 کروڑعوام جانتے ہیں کہ آج ملک میں شفاف ترین حکومت ہے، ہمارا مقصد عوام کوریلیف دینا اوران کے لیے آسانیاں پیدا کرنا ہے، عوام کےحقوق کا نگہبان ہوں،کسی کوعوامی مفادات پرڈاکہ نہیں ڈالنےدوں گا۔

وفاقی وزیر اطلاعات شبلی فراز نے کہا کہ ہماری کارکردگی کےسب سے بہترین جج عوام ہیں،وفاقی وزیر اطلاعات شبلی فتحریک انصاف کی حکومت کا فوکس عوام کے حقیقی مسائل پر ہے۔

شبلی فراز کا کہنا تھا کہ میرٹ کی حکمرانی تحریک انصاف کی حکومت کا طرۂ امتیازہے، سیاسی یتیم پاکستان کی سیاست سے آؤٹ ہوچکے ہیں ، اپوزیشن کابیانیہ پٹ چکا،عوام کوپٹےہوئےمہروں سےکوئی دلچسپی نہیں۔

وفاقی وزیر اطلاعات نے مزید کہا پی ٹی آئی کی ٹیم وزیر اعظم عمران خان کی قیادت میں متحد ہے، وزیراعظم کی قیادت میں صرف دیانت داری اورایمانداری کی سیاست ہوگی اور ان کی قیادت میں نیا پاکستان آگے بڑھا رہا ہے، حکومت نےمعیشت کو گرداب سے نکالنے کےٹھوس اقدامات کیے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں