The news is by your side.

Advertisement

رینجرز اختیارات پر وفاق کو کوئی سمری نہیں بھیجی، وزیر اعلیٰ سندھ

سیہون شریف: وزیر اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے اپنے آبائی علاقہ سیہون شریف کا دورہ کیا۔ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے رینجرز اختیارات سے متعلق سمری وفاق کو بھیجنے سے انکار کردیا۔

تفصیلات کے مطابق سندھ میں رینجرز اختیارات کا معاملہ بدستور سرخیوں کی زد میں ہے۔ وزارت داخلہ کا کہنا ہے کہ اس نے سندھ حکومت کی سمری مسترد کردی جبکہ وزیر اعلیٰ سمری ارسال کرنے سے ہی انکاری ہیں۔

وزیر اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کا کہنا ہے کہ رینجرز اختیارات سے متعلق وفاق کو سمری نہیں خط بھیجا ہے۔ وفاق کو سمری نہیں خط ہی بھیجا جاتا ہے۔

رینجرز اختیارات پر وفاق احکامات نہ دے، سندھ حکومت *

وزیر اعلیٰ سندھ مراد علی شاہ آج اپنے آبائی علاقہ اور حلقے سیہون شریف پہنچے تھے جہاں ان کا شاندار استقبال کیا گیا۔ انہوں نے اپنے والد عبداللہ شاہ کی قبر پر فاتحہ خوانی کی اور اس کے بعد اپنی رہائش گاہ کے باہر جمع افراد سے ملاقات کی۔

نو منتخب وزیر اعلیٰ نے سندھ کے تمام مسائل کو جلد حل کرنے کی یقین دہانی کروائی۔

میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ رینجرز اختیارات کے معاملے پر کسی کو سیاسی ایشو نہیں بنانے دیں گے۔ انہوں نے کراچی میں رینجرز کے کام کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ رینجرز امن وامان کے لیے اچھا کام کر رہی ہے۔

واضح رہے کہ وزیر اعلیٰ سندھ نے اپنی حلف برداری کے دوسرے ہی روز رینجرز اختیارات کی توسیع کی سمری پر دستخط کردیے تھے۔ سمری کے مطابق رینجرز پورے صوبے میں سال بھر تک قیام کرے گی جب کہ اس کے خصوصی اختیارات میں 3 ماہ کی توسیع کی گئی تھی۔

سمری کے مطابق رینجرز کے خصوصی اختیارات صرف کراچی تک محدود ہوں گے اور اس کا اطلاق 19 جولائی 2016 سے ہوگا۔

وفاقی وزارت داخلہ نے سمری پر تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے اسے مسترد کردیا تھا۔

وزارت داخلہ نے سمری کے لیے قانونی مشاورت بھی شروع کردی تھی جس کے بعد قانونی ماہرین نے سمری کا جائزہ لیا اورا بتدائی طور پر اسے مسترد کردیا۔ ان کا کہنا تھا کہ سندھ اسمبلی کی سمری قانونی معیار پر پورا نہیں اترتی اور یہ آئین کے آرٹیکل 147 کے مطابق نہیں ہے۔

کراچی میں رینجرز آپریشن سے دہشت گردی میں 80 فیصد کمی *

دوسری جانب معروف قانون داں اعتزاز احسن کا کہنا ہے کہ رینجرز سمیت کسی بھی قانون نافذ کرنے والے ادارے، جو صوبے میں کام کر رہا ہو، کے اختیارات کا معاملہ صوبائی حکومت کے پاس ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ اٹھارویں ترمیم کے بعد وفاق کو اس معاملے میں مداخلت کا حق ختم ہوچکا ہے۔

اس سے قبل سندھ میں رینجرز کی جانب سے کسی بھی شہری کو 90 روزہ تحویل میں رکھنے کے خصوصی اختیارات میں 77 روز کا اضافہ کیا گیا تھا جس کی مدت 19 جولائی کو ختم ہوچکی ہے۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں