The news is by your side.

Advertisement

پاک فوج سی پیک کی سیکیورٹی یقینی بنانے کے لئے پرعزم ہے: آرمی چیف

چین کی پیپلزلبریشن آرمی کے کمانڈر کا جی ایچ کیو کا دورہ، آرمی چیف سے ملاقات

راولپنڈی: آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا ہے کہ پاک فوج سی پیک کی سیکیورٹی یقینی بنانے کے لئے پرعزم ہے.

پاک فوج کے شعبہ برائے تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق آج چین کی پیپلز لبریشن آرمی کے کمانڈر  جنرل ہین ویگیو نے جی ایچ کیو کا دورہ کیا.

آئی ایس پی آر کے مطابق آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے پی ایل اے کے مغربی تھیٹر کے کمانڈر کی ملاقات ہوئی.

ملاقات میں علاقائی سیکیورٹی، پیشہ ورانہ امور پر تبادلہ خیال ہوا. چینی کمانڈر نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاک فوج کے کردارکی تعریف کی.

No PR-122/2019-ISPRRawalpindi – June 17, 2019General Han Weiguo, Commander People Liberation Army, Ground Forces of China , People Republic of China visited GHQ today and called on General Qamar Javed Bajwa, Chief of Army Staff. During the meeting matters related to regional security and professional interest were discussed. The Visiting General lauded Pakistan Army’s achievements in fight against terrorism and continued efforts for regional peace and stability. COAS reaffirmed Pakistan Army’s unwavering support for CPEC security. Earlier on arrival at GHQ a contingent of Pakistan Army presented guard of honour to the visiting dignitary. To pay homage to the martyrs of Pakistan Army, the visiting general laid floral wreath at Yadgar-e-Shuhada.

Posted by Maj Gen Asif Ghafoor on Monday, June 17, 2019

چینی کمانڈرنے علاقائی امن واستحکام کے لئے پاک فوج کے کردار اور اقدامات کو سراہا. اس موقع پر آرمی چیف نے کہا کہ فوج سی پیک کی سیکیورٹی کے لئے پرعزم ہے.

جی ایچ کیوآمد پر چینی کمانڈر کو گارڈ آف آنر پیش کیا گیا، چینی کمانڈر نے یادگار شہدا پر پھول چڑھائے.

مزید پڑھیں: آرمی چیف کی زیر صدارت فارمیشن کمانڈرز کانفرنس، وطن کی خدمت کے عزم کا اعادہ

یاد رہے کہ  12 جون 2019 کو   جی ایچ کیو میں سالانہ فارمیشن کمانڈرز کانفرنس منعقد ہوئی تھی، جس کی صدارت آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کی۔

فارمیشن کمانڈرز کانفرنس میں تمام جنرل آفیسرز نے شرکت کی، کانفرنس میں جیو اسٹرٹیجک صورت حال اور قومی سلامتی سے متعلق امور پر تبادلۂ خیال کیا گیا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں