The news is by your side.

Advertisement

کرونا کے خلاف تعاون، ایرانی صدر کا روسی ہم منصب سے رابطہ

ایران کے لیے آئی ایم ایف قرض کو امریکا کے ویٹو کرنے کا اقدام غیر قانونی ہے: حسن روحانی

تہران: کرونا وائرس کی وبا کے خلاف تعاون کے سلسلے میں ایرانی صدر حسن روحانی نے روسی صدر ولادی میر پیوٹن کو فون کر کے عالمی تعاون کی اہمیت پر گفتگو کی۔

تفصیلات کے مطابق ایرانی صدر حسن روحانی نے ٹویٹ کے ذریعے بتایا کہ انھوں نے اپنے روسی ہم منصب کو ٹیلی فون کیا تھا، اس گفتگو میں دونوں رہنماؤں نے کرونا کے خلاف عالمی تعاون کی اہمیت پر زور دیا۔

رہنماؤں نے اس امر پر اتفاق کیا کہ امریکا کے غیر قانونی رویوں پر یورپی یونین کو رد عمل دینا ہوگا، ایرانی صدر کا کہنا تھا کہ ایران کے لیے آئی ایم ایف قرض کو امریکا کے ویٹو کرنے کا اقدام غیر قانونی ہے۔

آئی ایم ایف نے 25 کرونا متاثرہ ممالک کے لیے قرضوں میں ریلیف کا اعلان کر دیا

ایرانی صدر کا کہنا تھا کہ روسی صدر کے ساتھ ٹیلی فونک گفتگو میں تہران اور ماسکو نے معاہدوں پر عمل درآمد پر بھی اتفاق کیا۔

واضح رہے کہ ایران میں کو وِڈ نائنٹین کے باعث اب تک 5,297 افراد جاں بحق ہو چکے ہیں جب کہ وائرس نے 84 ہزار سے زائد افراد کو متاثر کیا، جن میں سے اب 61 ہزار مریض صحت یاب ہو چکے ہیں۔ تاہم ابتدا میں ایران میں کرونا وائرس نہایت قاتل ثابت ہوا تھا، اور کئی حکومتی اہم شخصیات بھی اس کی زد میں آ کر زندگی سے ہاتھ دھو چکی ہیں۔

کرونا وبا سے نمٹنے کے لیے حکومتوں کی مدد کے لیے بین الاقوامی مالیاتی ادارے (آئی ایم ایف) نے متاثرہ ممالک کے لیے قرضوں میں ریلیف کا اعلان کر دیا تھا، یہ ریلیف 25 ممالک کے لیے تھا، ان میں افغانستان، برکینافاسو، سینٹرل افریقن ریپبلک، چاڈ، کوموروس، کانگو، گیمبیا، لائبیریا، مڈغاسکر، موزمبیق، جزائر سلیمان، تاجکستان، یمن، نیپال اور ہیٹی بھی شامل ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں