The news is by your side.

Advertisement

طالبہ کا اغوا اور زیادتی، عدالت نے ملوث جوڑے کو عبرت ناک سزائیں سنا دیں

راولپنڈی: ایم ایس سی کی طالبہ کے اغوا اور زیادتی کے مقدمے میں عدالت نے ملوث جوڑے کو عبرت ناک سزائیں دے دیں۔

تفصیلات کے مطابق راولپنڈی میں ایم ایس سی کی طالبہ کے اغوا اور زیادتی کے بعد ویڈیو بنانے کے کیس میں ملوث جوڑے کو سیشن کورٹ نے سزائیں سنا دیں۔

جرم ثابت ہونے پر عدالت نے مجرم قاسم جہانگیر کو سزائے موت کے علاوہ عمر قید، 3 سال قید، اور 25 لاکھ روپے جرمانے کی سزائیں سنائیں۔ مجرم کو سزائے موت جبری زیادتی اور ویڈیو بنانے کے جرم پر دی گئی، اغوا کیس میں مجرم کو عمر قید جب کہ ویڈیو اپ لوڈ کرنے پر 3 سال قید اور مجموعی طور پر 25 لاکھ روپے جرمانہ کیا گیا۔

مجرم قاسم کی بیوی مجرمہ کرن محمود کو عدالت نے جرم ثابت ہونے پر عمر قید کے علاوہ 3 سال قید اور 20 لاکھ روپے جرمانے کی سزائیں سنائیں۔

مجرمان کو ایڈیشنل اینڈ ڈسٹرکٹ سیشن جج جہانگیر علی گوندل نے سزائیں سنائیں، مجرمان نے ایم ایس سی کی طالبہ کو اغوا کر کے زیادتی کی، اور ویڈیو بنائی تھی۔

رپورٹس کے مطابق ایم ایس سی کی طالبہ کو اگست 2019 میں راولپنڈی میں تھانہ سٹی کی حدود سے اغوا کیا گیا تھا، مجرمان لڑکی کو گلستان کالونی میں اپنے گھر پر لے گئے تھے اور وہاں اس کے ساتھ زیادتی کی اور ویڈیو بھی بنائی۔

بعد ازاں متاثرہ لڑکی کی درخواست پر تھانہ سٹی میں اگست 2019 میں مقدمہ درج ہوا تھا۔

اس کیس میں پولیس حکام کا کہنا تھا کہ ملزمان نے 45 لڑکیوں کو نشانہ بنایا تھا، اور ان کے قبضے سے 10 واقعات کی ویڈیوز اور ہزاروں تصاویر بھی برآمد ہوئیں۔ ملزم قاسم کم عمر لڑکیوں کو اپنی بیوی کے ذریعے ورغلا کر زیادتی کا نشانہ بناتا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں