The news is by your side.

Advertisement

عرب ممالک میں مقیم افراد کو کرونا وائرس کی علامات ظاہر ہونے پر کیا کرنا ہے؟

ریاض / دبئی: سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کے محکمۂ صحت نے کرونا وائرس سے متاثر ہونے والے افراد کے لیے اہم ہدایت نامہ جاری کردیا۔

محکمۂ صحت کی جانب سے جاری ہونے والے اعلامیے میں بتایا گیا ہے کہ کرونا کی علامات ظاہر ہونے اور ٹیسٹ کروانے کے لیے شہری پہلے نمبر پر رابطہ کریں اور اطلاع کے بغیر کسی دفتر نہیں پہنچے تاکہ وائرس کی روک تھام کو یقینی بنایا جاسکے۔

اس ضمن میں سعودی عرب کے وزارت صحت نے ہیلپ لائن نمبر 937 جاری کیا اور شہریوں کو ہدایت کی کہ وہ تیز بخار، نظام تنفس میں خرابی کی علامات ظاہر ہونے پر حکام کو آگاہ کریں اور فوری طور پر ٹیسٹ کرائیں۔

مزید پڑھیں: کرونا وائرس سے بچاؤ کیلئے ماہرین نے اہم تجاویز دے دیں

وزارت کے ترجمان ڈاکٹر محمد عبدالعالی نے ایک بیان میں کہا ہے کہ کرونا وائرس سے متاثرہ علاقوں میں رہنے والے شہری بھی مذکورہ نمبر پر  اطلاع دیں تاکہ اُن کے خاندانوں اور کمیونٹی کو مہلک وائرس سے تحفظ فراہم کیا جائے اور لوگوں کی بروقت مدد کی جائے۔

ڈاکٹر محمد عبدالعالی کا کہنا تھا کہ ’سعودی عرب کے مختلف شہریوں میں واقع 25 اسپتالوں میں 2200 سے زائد بستروں کو کرونا کے مریضوں کے لیے مختص کردیا گیا جبکہ 1400 کے قریب خصوصی کمرے (آئسولیشن وارڈ) تیار کیے گئے ہیں۔

متحدہ عرب امارات میں کرونا وائرس

متحدہ عرب امارات کے محکمہ صحت نے کرونا وائرس کے مریضوں کی شناخت کے لیے ایک پروٹوکول وضع کیا ہے۔جس کے تحت کسی بھی متاثرہ شخص کے اسپتال سے رابطے کے بعد 24 گھنٹے کے اندر اُس کی اسکرینگ کی جائے گی اور  اسی دران نتائج بھی جاری کی جائے گی۔

یہ بھی پڑھیں: کرونا وائرس : حفاظتی اقدامات کے بعد مسجد الحرام اور مسجد نبویﷺ زائرین کیلئے کھول دی گئی

محکمہ صحت کے مطابق اسکرینگ اور رپورٹ جاری ہونے کے بعد اگر مریض وائرس سے متاثر ہوا تو اُسے دیگر سے علیحدہ کر کے فوری طور پر مقررہ اسپتال منتقل کیا جائے گا اور پھر علاج کا سلسلہ شروع ہوگا۔

کرونا وائرس کی علامات

امریکا کے مرکز برائے انسداد امراض (سی ڈی سی) کے مطابق اگر کسی شہری کو مسلسل تیز بخار، کھانسی، سانس لینے میں دشواری کا سامنا ہے تو وہ طبی عملے سے رجوع کرے۔

احتیاطی تدابیر

کرونا سے متاثرہ کسی بھی شخص سے ملاقات نہ کریں۔

اگر گزشتہ چودہ روز کے اندر ملاقات ہوئی اور علامات ظاہر ہونا شروع ہوگئیں تو فوری طور پر ٹیسٹ کروائیں۔

متاثرہ ممالک کا سفر کرنے والے چودہ روز تک اپنی سرگرمیاں محدود کریں اور فوری طور پر ٹیسٹ کروائیں۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں