The news is by your side.

Advertisement

کوویڈ19 ویکسین خام تیل پر بھی اثر انداز، مگر کیسے؟

ریاض : اوپیک پلس گروپ کی جانب سے تیل کی سپلائی سے متعلق اقدام اور کورونا وائرس کی ویکسین سے متعلق پیش رفت کی پیداکردہ مشترکہ امید کے بعد خام تیل کی قیمت میں اضافہ ہوا ہے۔

سعودی ذرائع ابلاغ کے مطابق خام تیل کا بینچ مارک، برینٹ کروڈ نو فیصد اضافے کے ساتھ 43 ڈالر فی بیرل سے زائد کو پہنچا۔ عالمی سطح پر معاشی لاک ڈاؤن کے خاتمے کی امید نے دنیا بھر کے بازار حصص پر بھی اچھا اثر ڈالا ہے۔

امریکی دوا ساز کمپنی فائزر اور جرمن کمپنی بائیو این ٹیک نے کہا ہے کہ 40 ہزار سے زیادہ افراد کے ٹیسٹ سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ ویکسین کورونا وائرس سے بچاؤ کے لیے 90 فیصد تک مؤثر ہے۔

فائزر کمپنی کا کہنا ہے کہ اسے توقع ہے کہ وہ2020 میں50 ملین ویکسین کی خوراکیں دنیا بھر میں فراہم کرے گی جبکہ سال 2021میں1.3ارب ویکسین کی خوارکیں فراہم کی جائیں گی۔

ابو ظبی میں توانائی کی ایک کانفرنس سے خطاب میں سعودی عرب کے وزیر توانائی شہزادہ عبدالعزیز بن سلمان نے کہا کہ ویکسین کی شکل میں وائرس کے خاتمے کا حل مل جائے گا جبکہ ویکسین کی دستیابی سے بھی صورت حال میں بہتری آئے گی۔

انہوں نے تیل کی ترسیل پر قابو پانے کے امکانات کے بارے میں بھی بات کی جس کی وجہ سے قیمتیں کم کرنا پڑی تھیں۔
انہوں نے باقاعدہ اشارہ دیا کہ سعودی عرب اور روس جو کہ اوپیک پلس میں بڑے برآمد کنندگان ہیں، موجودہ ترسیل کے معاہدے میں ردوبدل کرسکتے ہیں۔

اوپیک پلس گروپ جنوری سے عالمی منڈیوں میں یومیہ دو ملین بیرل تیل مہیا کرے گا لیکن قیاس آرائیاں کی جا رہی ہیں کہ اس میں تبدیلی ہو سکتی ہے۔

کرونا ویکسین بنانے والی کمپنی نے ایشیائی ممالک کو خوفناک خبر سنادی

توانائی سے متعلق کچھ ماہرین نے پیشن گوئی کی ہے کہ تیل کی موجودہ پیداوار 77 لاکھ بیرل یومیہ کو مزید تین ماہ تک برقرار رکھا جا سکتا ہے، کورونا وائرس کی وجہ سے دنیا بھر میں جاری لاک ڈاؤن نے بھی تیل کی عالمی منڈی کو بھی متاثر کیا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں