The news is by your side.

Advertisement

پشاور دھماکے کا مقدمہ درج ، دہشت گردی کی دفعات شامل

پشاور : پشاور کی مسجد میں دھماکے کا مقدمہ درج کرلیا گیا ، ایف آئی آر میں دہشت گردی کی دفعات درج کی گئیں ہیں۔

تفصیلات کے مطابق سی ٹی ڈی نے پشاور دھماکے کا مقدمہ درج کرلیا ، ایف آئی آر کی کاپی اے آر وائی نیوز نے حاصل کر لی ہے۔

مقدمہ ایس ایچ او تھانہ خان رازق کی مدعیت میں درج کیا گیا اور دھماکے کی ایف آئی آر میں دہشت گردی کی دفعات درج کی گئیں ہیں۔

متن میں کہا گیا کہ مسجد کی سیکورٹی چیک کرنے کے بعد ساتھ کی گلی میں پہنچا تو فائرنگ کی آواز سنی، واپس مسجد لوٹا تو پولیس والے زخمی اور دھماکا ہو چکا تھا۔

ایف آئی آر میں کہا ہے کہ خودکش حملہ آور نے مسجد میں گھس کر پہلے اندھا دھند فائرنگ کی اور فائرنگ کے بعد خود کش حملہ نے خود کو دھماکے سے اڑا دیا۔

اس سے قبل پشاور خودکش حملے کے اندراج مقدمہ کیلئے مراسلہ سی ٹی ڈی کو ارسال کیا گیا تھا ، متن میں کہا گیا تھا کہ حملہ آور کالے کپڑے پہنے ہوئے تھا، پیدل آیا ، اس کے پاس پستول تھا، حملہ آور کی جانب سے پہلے فائر میں پولیس اہلکار کو نشانہ بنایا گیا تھا۔

گذشتہ روز پشاور کے مشہور و معروف قصہ خوانی بازار کی جامع مسجد میں دھماکا ہوا، جس کے نتیجے میں بچوں سمیت 56 افراد شہید ہوگئے تھے۔

پویس پی سٹی نے افسوسناک واقعے سے متعلق بتایا تھا کہ دھماکا جامع مسجد کوچہ رسالدار میں اسوقت ہوا جب نمازی جمعے کی نماز کی ادائیگی میں مصروف تھے، دھماکے کے بعد مسجد میں افراتفری پھیل گئی اور ہر کوئی اپنے پیاروں کی تلاش میں مارا مارا پھرتا رہا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں