site
stats
پاکستان

شادی میں پیسے لوٹنے پرگارڈ نے بچے کی جان لے لی

ڈسکہ : شادی ہال کے گارڈ نے بندوق کا بٹ مار کر معصوم بچے کو مار ڈالا۔ نو سالہ دانش بارات میں پیسے لوٹ رہا تھا، بچے نے موقع پر ہی دم توڑ دیا، ملزم فرار ہوگیا، پنجاب کے وزیر برائے انسانی حقوق خلیل طاہر سندھو نے اے آر وائی نیوز کی خبر کا نوٹس لے لیا۔ بچے کی والدہ نے رو رو کر برا حال کرلیا۔

تفصیلات کے مطابق ننھے طالب علم کو شادی میں پیسے لوٹنے کی سزا موت کی صورت میں ملی، ڈسکہ کا رہائشی نو سالہ دانش اسکول سے واپس گھر آرہا تھا کہ راستے میں ایک شادی ہال کے باہر بارات دیکھنے کھڑا ہوگیا۔

اس دوران جب دولہا پر پیسے لٹائے جا رہے تھے تو وہ بھئی دیگربچوں کے ساتھ پیسے لوٹنے لگا۔ قریب کھڑے سیکیورٹی گارڈ نے غصے میں آکر دانش کے سر پربندوق کا بٹ دے مارا۔

گن مین نے بچے کو دولہا کے قریب سے پیسے لوٹنے پر نشانہ بنایا، جس سے دانش کے سر پر گہرا زخم آیا اور زیادہ خون بہنے کی وجہ سے وہ موقع پر ہی چل بسا۔

واقعے کے بعد ملزم گن مین صفدر موقع سے فرار ہونے میں کامیاب ہوگیا۔ واقعے کی اطلاع ملنے پر پولیس جائے وقوعہ پر پہنچی اور بچے کی لاش تحویل میں لے کر قانونی کارروائی کیلئے اسپتال منتقل کیا۔

پولیس نے جائے وقوعہ سے دیگر شواہد لیے اور وہاں موجود لوگوں سے ابتدائی تفتیش بھی کی، آخری اطلاعات تک واقعے کا مقدمہ درج نہیں ہو سکا تھا۔

اپنے بچے کی موت کی اطلاع سنتے ہی اس کی ماں صدمے سے نڈھال ہوگئی، دانش کی والدہ نے رو رو کر متعلقہ حکام سے انصاف کی اپیل کی ہے۔

بعد ازاں بچے کی ہلاکت پر صوبائی وزیر برائے انسانی حقوق نے نوٹس لے لیا، انہوں نے کہا کہ حکومت اس قسم کے انسانیت سوز واقعات پر کسی صورت چشم پوشی نہیں کرسکتی۔

اس کے علاوہ صوبائی وزیر خلیل طاہر سندھو نے گوجرانوالہ میں شوہر کے ہاتھوں جلنے والی خاتون پر بھی آرپی او سے رپورٹ طلب کرلی ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top