The news is by your side.

Advertisement

کیدار شرما کا تذکرہ جن سے نام وَر فلمی ستاروں نے ‘بخشش’ وصول کی

کیدار شرما جن اداکاروں اور آرٹسٹوں کے کام سے خوش ہوتے، انھیں انعام میں‌ کچھ رقم ضرور دیتے تھے۔ بالی وڈ کے کئی ستاروں نے ان سے داد اور بخشش وصول کی تھی جن میں راج کپور، دلیپ کمار، گیتا بالی اور نرگس بھی شامل ہیں۔ بالی وڈ کے اس باکمال اور کام یاب فلم ساز نے آج ہی کے دن 1999ء میں ہمیشہ کے لیے اپنی آنکھیں‌ بند کرلی تھیں۔

کیدار شرما نے کئی اداکاروں اور مختلف آرٹسٹوں کو فلم انڈسٹری میں‌ متعارف کروایا اور کام کرنے کا موقع دیا۔ وہ ایک ہمہ جہت شخصیت تھے۔ وہ فلم سازی کے ساتھ فنونِ‌ لطیفہ کے مختلف شعبوں کا علم اور ان میں گہری دل چسپی رکھتے تھے۔

12 اپریل 1910ء کو نارووال (پاکستان) میں پیدا ہونے والے کیدار شرما نے امرتسر میں تعلیم مکمل کی اور روزگار کی تلاش میں ممبئی چلے گئے۔ 1933ء میں کیدار کو دیوکی بوس کی ہدایت کاری میں بننے والی فلم ”پران بھگت” دیکھنے کا موقع ملا۔ اس فلم نے انھیں بہت متاثر کیا اور کیدار نے فلم نگری میں کیریئر بنانے کا فیصلہ کیا، اس خواب کی تکمیل کے لیے انھوں نے کولکتہ کا رخ کیا جہاں کسی طرح دیوکی بوس سے ملاقات ہوگئی اور انہی کی سفارش پر نیو تھیٹر میں بطور سنیماٹو گرافر کام ملا۔

سنیماٹو گرافر کی حیثیت سے کیدار کی پہلی فلم ‘سیتا’ تھی۔ اس کے بعد نیو تھیٹر کی فلم ‘انقلاب’ میں انھیں ایک چھوٹا سا کردار نبھانے کو ملا اور 1936ء میں فلم ”دیو داس” نے انھیں ایک باصلاحیت فن کار ثابت کرتے ہوئے فلمی کیریئر بنانے کا موقع فراہم کیا۔بعد میں‌ انھوں نے بطور ڈائریکٹر اپنی شناخت بنائی۔ "چتر لیکھا” وہ فلم تھی جس نے انھیں ڈائریکٹر کی حیثیت سے کام یاب کیا۔ انھوں نے راج کپور کو پہلی مرتبہ سلور اسکرین پر پیش کیا تھا۔ 1950ء میں کیدار نے فلم ”باورے نین” بنائی اور گیتا بالی کو پہلی مرتبہ بطور اداکارہ کام کرنے کا موقع دیا۔ ان کی ایک فلم ”جوگن” سپر ہٹ ثابت ہوئی جس میں دلیپ کمار اور نرگس نے اہم کردار ادا کیے تھے۔

کیدار شرما نغمہ نگار بھی تھے۔ انھوں نے متعدد فلموں کے لیے گیت تحریر کیے۔ ان کا فنی سفر تقریباً پانچ دہائیوں تک جاری رہا اور ان کا نام بڑے پردے کے ایک باکمال کی حیثیت سے امر ہوگیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں