The news is by your side.

Advertisement

معروف مترجم، مدیر اور متعدد معلوماتی کتب کے مؤلف سیّد قاسم محمود کی برسی

آج اردو کے ممتاز مترجم، صحافی، افسانہ نگار اور متعدد معلوماتی اور حوالہ جاتی کتب کے مؤلف سیّد قاسم محمود کا یومِ‌ وفات ہے۔ ان کی زندگی کا سفر 31 مارچ 2010ء کو تمام ہوا تھا۔ سیّد قاسم محمود جوہر ٹائون، لاہور کے قبرستان میں آسودۂ خاک ہیں۔

وہ 17 نومبر 1928ء کو کھرکھودہ، ضلع روہتک میں پیدا ہوئے تھے۔ قیامِ پاکستان کے بعد 1951ء میں پنجاب میں مجلسِ زبانِ دفتری سے بطور مترجم منسلک ہوئے۔ بعد کے برسوں میں انھوں نے لیل و نہار، صحیفہ، کتاب، سیّارہ ڈائجسٹ، ادبِ لطیف اور قافلہ جیسے جریدوں کی ادارت کی۔

1970ء میں لاہور سے انسائیکلو پیڈیا کا اجرا کیا اور 1975ء میں شاہ کار جریدی کتب شایع کرنا شروع کیں۔ 1980ء میں وہ کراچی چلے گئے اور وہاں 1998ء تک مقیم رہے۔ اس عرصے میں انھوں نے ماہ نامہ افسانہ ڈائجسٹ، طالبِ علم اور سائنس میگزین کے نام سے مختلف جرائد جاری کیے اور اسلامی انسائیکلو پیڈیا، انسائیکلو پیڈیا فلکیات، انسائیکلو پیڈیا ایجادات اور انسائیکلو پیڈیا پاکستانیکا شایع کیے جو ان کا بڑا کارنامہ ہیں۔

وہ ایک اچّھے افسانہ نگاراور مترجم بھی تھے۔ تاہم ان کی علمی کاوشوں اور تالیف کردہ کتب کو زیادہ پذیرائی ملی۔ سید قاسم محمود کے افسانوں کے مجموعے دیوار پتھر کی، قاسم کی مہندی اور وصیت نامہ کے نام سے اشاعت پذیر ہوئے تھے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں