The news is by your side.

Advertisement

فارن فنڈنگ کیس کا فیصلہ ، شاہد خاقان عباسی نے بڑا دعویٰ کردیا

اسلام آباد : مسلم لیگ ن کے رہنما شاہد خاقان عباسی نے دعویٰ کیا ہے کہ الیکشن کمیشن پرالزامات کی وجہ فارن فنڈنگ کیس ہے، فیصلہ حکومت کے خلاف ہی آئے گا۔

تفصیلات کے مطابق سابق وزیراعظم اور مسلم لیگ ن کے رہنما شاہد خاقان عباسی نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا وفاقی کابینہ الیکشن کمیشن پر حملہ آور ہوئی ہے، چیئرمین نیب سپریم کورٹ کے جج نہیں ہیں، ہارتسلیم کرنےکی بجائےالیکشن کمیشن پرعدم اعتمادکااظہارکردیا.

شاہد خاقان عباسی نے حکومت پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ حکومت ،وزیرخزانہ اوروزیراعظم ناکام ہوگئے، ہراساں کرنےکی پٹیش نہ دیں توبہترہے، یہ وہی الیکشن کمیشن ہے، جس کے 20 پی او حکومت اٹھا کرلے گئی۔

سینیٹ چیئرمین کے انتخاب کے حوالے سے لیگی رہنما کا کہنا تھا کہ ہدایت میں واضح ہے کہ خانے کے اندر کہیں بھی مہر لگائیں، عدالتوں کے چکر لگیں گے، عدالتیں فیصلہ کریں گی۔

ان کا کہنا تھا کہ اخلاقی قدریں ہوتیں توچیئرمین سینیٹ کہتےمیں ہارگیاہوں، ملک کی جمہوری تاریخ میں ایک باب رقم ہوتا، یہ معاملہ چلنے والا ہے ، نہ چل سکتا ہے یہ لوگ بے نقاب ہوں گے ، یہ لوگ عدالتوں کے سامنے کھڑے ہوں گے۔

سینیٹ الیکشن سے متعلق شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ سینیٹ الیکشن 2018کےالیکشن کا ری پلے ہے، ملک اب 2018الیکشن ری پلے برداشت نہیں کرسکتا، یہ لوگ بے نقاب ہوں گے، انہی عدالتوں میں اصلی کیسز میں کھڑے ہوں گے۔

مسلم لیگ ن کے رہنما نے دعویٰ کیا کہ الیکشن کمیشن پر الزامات کی وجہ فارن فنڈنگ کیس ہے، یہ فیصلہ حکومت کے خلاف ہی آئے گا ، فیصلہ آئے گا باہر سے پیسے آئے تھے اور عمران خان نے اپنے اکاؤنٹ میں پیسے ڈالے۔

شہباز گل پر سیاہی پھینکنے کے واقعے پر ان کا کہنا تھا کہ شہبازگل کومیں نہیں جانتا ان پرسیاہی پھینکی گئی ہےتوبہت غلط ہوا، ایسانہیں ہونا چاہیے تھا، ہم نے ایسی سیاست کی کبھی حمایت نہیں کی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں